سعودی عرب کے اندرونی معاملات میں مداخلت کا سخت جواب دیں گے:الجبیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر نے کہا ہے کہ ان کا ملک کسی دوسرے ملک کے اندرونی معاملات میں مداخلت نہیں کرتا اور ہم اپنے اندرونی معاملات میں بھی کسی کو دخل انداز کی اجازت نہیں دیتے۔ اگر کوئی سعودی عرب کے اندرونی معاملات میں مداخلت کرے گا تو اس کا بھرپور جواب دیا جائے گا۔

سماجی رابطوں کی ویب سائیٹ ’ٹوئٹر‘ پر پوسٹ کی گئی متعدد ٹویٹس میں انہوں نے کہا کہ کینیڈا نے سعودی عرب کے بارے میں موقف منفی اور گمراہ کن معلومات کی بنیاد پراختیار کیا ہے۔ مملکت میں بعض افراد کی گرفتاریاں ہمارے عدالتی نظام کے ماتحت ہیں اور وہ ہمارا عدالتی نظام حقوق کی مکمل کفالت کرتا ہے۔

خیال رہے کہ اتوار کے روز سعودی عرب نے کینیڈا کے سفیر کو چوبیس گھنٹوں میں ملک چھوڑنے اور اوٹاوا میں متعین سعودی سفیر کومشاورت کے لیے واپس بلا لیا تھا۔

سعودی عرب نے کینیڈا کے ساتھ تجارتی اور سرمایہ کاری معاملات بھی معطل کردیے ہیں اور کئی دوسرے اقدامات کا بھی جائزہ لیا جا رہا ہے۔ سعودی عرب کی طرف سے کینیڈا کے خلاف یہ اقدام اس وقت کیا گیا جب کینیڈا کی حکومت نے سعودی عرب میں بعض افراد کی گرفتاریوں پر شدید نکتہ چینی اور کہا کہ سعودی عرب انسانی حقوق کے کارکنوں کو ہراساں کرنے کی پالیسی پر عمل پیرا ہے۔

سعودی عرب نے کینیڈا کا الزام یکسر مسترد کرتے ہوئے واضح کیا ہے کہ الریاض اپنے اندرونی معاملات میں کسی کو مداخلت کی اجازت نہیں دیتا۔

مقبول خبریں اہم خبریں