عرب اتحاد یمن میں دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑ رہا ہے: المالکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں آئینی حکومت کی بحالی کے لیے سرگرم عرب عسکری اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی نے کہا ہے کہ عرب اتحاد یمن میں القاعدہ، ’داعش‘ اور ایران نواز حوثی گروپوں جیسے دہشت گرد گروپوں کے خلاف نبرد آزما ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ ہم یمن میں دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑ رہےہیں۔ یہ تمام دہشت گرد گروپ انتہا پسندانہ نظریات میں تصویر کا ایک ہی رخ ہیں۔ انتہا پسندانہ نظریات، عدم برداشت اور مل جل کر نہ رہنے کی پالیسی ان کی مشترکہ قدریں ہیں۔

سعودی عرب کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ’ایس پی اے‘ کے مطابق ایک بیان میں کرنل ترکی المالکی نے کہا کہ دوست اور برادر ملکوں کے ساتھ مل کر دہشت گرد تنظیموں کا نیٹ ورک تباہ کرنے کا عمل، ان کے خلاف زمینی، فضائی اور بحری حملے جاری رکھے جائیں گے۔ یہ دہشت گردی کے خلاف جنگ ہے اور ہم پوری دنیا کی سلامتی کے لے لڑ رہے ہیں۔

کرنل ترکی المالکی نے خبر رساں ادارے’ایسوسی ایٹڈ پریس‘ میں ’یمن جنگ امریکا اور اس کے اتحادیوں اور القاعدہ سے مربوط‘ کےعنوان سے شائع ہونے والی رپورٹ مسترد کردی۔ ان کا کہنا تھا کہ برطانوی خبر رساں ایجنسی کی طرف سے غیر پیشہ وارانہ اور من گھڑت معلومات کی بنیاد پر عرب اتحاد کی یمن میں جاری کارروائیوں کو متنازع بنانے کی کوشش کی ہے۔ ایسوسی ایٹڈ پریس میں شائع ہونے والی معلومات حقائق کےمنافی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ یمن میں دہشت گردوں کے خلاف جنگ منطقی انجام تک جاری رکھی جائے گی۔ ہماری جنگ کسی ایک گروپ کے خلاف نہیں بلکہ عالمی دہشت گردی کے خلاف ہے۔ یمن میں حوثیوں، جزیرۃ العرب کی القاعدہ اور داعش جیسے تمام گروپوں کی بیخ کنی تک جنگ جاری رہے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں