ایران نے حوثیوں کو سعودی جہازوں پرحملوں کے احکامات دیے:شہزادہ خالد بن سلمان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا میں سعودی عرب کے سفیر شہزادہ خالد بن سلمان نے کہا ہے کہ ایرانی سپاہ پاسداران انقلاب کے ایک لیڈر میجر جنرل ناصر شعبانی نے ڈھٹائی کے ساتھ دعویٰ کیا ہے کہ ایران نے بحر الاحمر میں سعودی عرب کے تیل بردار جہازوں پرحملوں کے لیے حوثیوں کو احکامات دیے تھے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق مائیکرو بلاگنگ ویب سائیٹ ’ٹوئٹر‘ پر پوسٹ ایک بیان میں شہزادہ خالد بن سلمان نے کہا کہ حوثی اور لبنانی حزب اللہ ایران کی تزویراتی گہرائی’اسٹریٹیجک ڈیپتھ‘ ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ایرانی نظام نے اپنی خبر رساں ایجنسیوں کی طرف سے سعودی تیل بردار جہازوں پرحملوں کی غائب کردی تھی۔ انہوں نے اپنی ٹویٹ پر جنرل شعبانی کے اس دعوے کی خبر کا ایک لنک بھی پوسٹ کیا ہے اور کہا ہے کہ یہ درست ہے کہ سعودی عرب کے تیل بردار جہازوں پر حملوں کا حکم ایران کی طرف سے دیا گیا تھا۔

خیال رہے کہ ایرانی خبر رساں ایجنسی ’فارس‘ نے ’ثارا اللہ ‘ بریگیڈ کے قاید ناصر شعبانی کا ایک بیان نقل کیا تھا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ ہم نے یمنیوں سے کہا تھا کہ وہ سعودی عرب کے تیل بردار جہازوں کو نشانہ بنائیں۔ انہوں نے ہماری ہدایت پرعمل درآمد کیا۔ تاہم چند منٹ کےبعد یہ خبر ’فارس‘ نیوز ایجنسی کی ویب سائیٹ سے ہٹا دی گئی تھی۔

قابل ذکررہے کہ بدھ 25 جولائی کو یمن کی باب المندب بندرگاہ کے قریب سعودی عرب کے دو تیل بردار جہازوں پر حوثیوں کی کشتیوں نے حملہ کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں