.

یورپی ممالک کی قیادت ایران کی خوش نودی چاہتی ہے:امریکی سینیٹر

مظلوم ایرانی قوم کی پکار صرف صدر ٹرمپ سنتے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی کانگریس کے ایک سرکردہ رکن اور سینٹ میں مسلح افواج کمیٹی کے رکن سینیٹر لینڈی گراہم نے ایران کے حوالے سے یورپی ممالک کی پالیسی کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ یورپی ممالک ظالم ایرانی نظام کی خوش نودی کے حصول کے لیے کوشاں ہیں اور ان کا موقف دوسری عالم جنگ اور ہٹلر کی پالیسیوں کے مشابہ ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سماجی رابطوں کی ویب سائیٹ ’ٹویٹر‘ پر پوسٹ کی گئی متعدد ٹویٹس میں ری پبلیکن پارٹی کے رکن کانگریس مسٹر لینڈ گراہم نے کہا کہ مجرم ایرانی رجیم کے حوالے سے یورپی ممالک کی قیادت کا طرز عمل یورپ کے لیے باعث عار ہے۔ ایران کا موجودہ نظام ایرانی قوم کی گردوں پر مسلط کیا گیا ہے جسے ایرانی قوم کی حمایت حاصل نہیں۔

انہوں نے لکھا کہ یورپی ممالک کو مظلوم ایرانی عوام کی بہتر زندگی کے لیے چیخ پکار سنائی نہیں دیتی کانگریس میں بھی بہت سے لوگوں سے زیادہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ ان کی آواز کو سنتے ہیں۔

لینڈ گراہم نے کہا کہ یورپی ممالک کی قیادت صرف ایرانی رجیم کی منشاء اور اس کی رضا حاصل کرنا چاہتی ہے۔ میں یورپی ممالک کی قیادت سے پرزور مطالبہ کرتاہوں کہ وہ ایرانی آیت اللہ نظام کے خلاف صدر ٹرمپ کی حکمت عملی کی حمایت کریں اور سب مل کر ایرانی قوم کو ظالم نظام سے نجات دلائیں۔

خیال رہے کہ امریکی سینیٹر کی طرف سے یہ تنقید ایک ایسے وقت میں کی گئی ہے جب حال ہی میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایران کے خلاف نئی اقتصادی پابندیوں کا اعلان کیا تو بہت سے یورپی ممالک نے امریکی اعلان کو مسترد کردیا تھا۔