.

دمشق کے نزدیک فضا میں ہدف کا راستہ روک لیا گیا: شامی سرکاری میڈیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں بشار حکومت کے زیر انتظام ایک خبر رساں ایجنسی کا کہنا ہے کہ فضائی دفاعی نظام نے لبنانی سرحد کے نزدیک شام کے دیہی علاقے میں فضائی حدود کی خلاف ورزی کرنے والے ایک "معاند ہدف" کا راستہ روک لیا۔

شامی خبر رساں ایجنسی کے مطابق یہ واقعہ دیر العشائر کے علاقے کے اوپر پیش آیا۔

روسی وزارت دفاع کی جانب سے اعلان کیا گیا تھا کہ الاذقیہ صوبے میں اُس کے فضائی عسکری اڈّے حمیمیم کو دو ڈرون طیاروں کے ذریعے حملے کا نشانہ بنایا گیا جسے ناکام بنا دیا گیا۔

رواں ماہ 3 اگست کو بھی شام کی سرکاری خبر رساں ایجسنی (SANA) نے اعلان کیا تھا کہ شامی حکومت کے فضائی دفاعی نظام نے دمشق کے مغرب میں ایک "مُعاند ہدف" کا راستہ روک لیا۔ تاہم اس حوالے سے کسی جانب پر الزام عائد نہیں کیا گیا اور نہ یہ بتایا گیا نہ نشانہ کس ہدف کو بنایا گیا۔

عام طور پر دمشق کی جانب سے اسرائیل پر الزام عائد کیا جاتا ہے کہ وہ فضائی حملوں کے ذریعے شام میں عسکری ٹھکانوں کو نشانہ بناتا ہے۔

شام میں 2011ء کے بعد سے اسرائیل نے بارہا شام میں بشار کی فوج یا لبنانی تنظیم حزب اللہ کے عسکری ٹھکانوں کو نشانہ بنایا ہے۔ کچھ عرصہ قبل اسرائیل کی آخری کارروائی میں شام میں ایرانی ٹھکانوں پر حملہ کیا گیا تھا۔