.

مصری فورسز نے قاہرہ کے نزدیک قبطی چرچ پر خودکش حملہ ناکام بنا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کی سکیورٹی فورسز نے دارالحکومت قاہرہ کے نزدیک واقع قبطی عیسائیوں کے ایک گرجا گھر پر خودکش حملہ ناکام بنا دیا ہے۔

مصری میڈیا کے مطابق سکیورٹی فورسز نے قاہرہ کے نزدیک واقع القلیوبیہ میں شبرا الخیمہ کے مقام پر خودکش حملے کو ناکام بنایا ہے۔ دہشت گرد نے السیدہ العذرا ء چرچ میں درانداز ہونے اور وہاں مصروفِ عبادت قبطیوں کے درمیان گھسنے کی کوشش کی تھی۔اس نے بارود سے بھری خودکش جیکٹ پہن رکھی تھی۔

سکیورٹی فورسز نے اس کو پکڑ لیا اور اس کی قبطی عیسائیوں کے درمیان خودکو اڑانے کی کوشش ناکام بنا دی ۔ موقع پر موجود سکیورٹی اہلکاروں نے اس کو فوری طور پر ہلاک کردیا۔اس کارروائی میں دو شہری زخمی ہوگئے ہیں۔

واضح رہے کہ حالیہ برسوں کے دوران میں سخت گیر جنگجو گروپ داعش نے مصر کی عیسائی اقلیت پر متعدد حملوں کی ذمے داری قبول کی ہے۔ان میں اپریل 2017ء میں پام سنڈے کے موقع پر قبطی عیسائیوں کی دعائیہ تقریب کے شرکاء پر تباہ کن حملہ اور دسمبر 2016ء میں قاہرہ میں واقع سب سے بڑے کیتھڈرل چرچ پر خودکش بم حملہ بھی شامل ہے جس کے نتیجے میں اٹھائیس افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

گذشتہ دسمبر میں ایک مسلح شخص نے قاہرہ میں قبطیوں کے آرتھو ڈکس چرچ پر فائرنگ کردی تھی جس سے گیارہ افراد ہلاک ہوگئے تھے ۔ داعش ہی نے اس خودکش حملے کی ذمے داری قبول کی تھی۔