.

دہشت گردوں کے خلاف کارروائی میں اردن کے 4 فوجی افسر ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اردن کے حکام کا کہنا ہے کہ ’السلط‘ شہر میں اشتہاری دہشت گردوں کے ایک گروپ کے خلاف کی گئی کارروائی کے دوران مشتبہ دہشت گردوں کی فائرنگ اوردستی بموں سے کم سے کم چار فوجی افسر ہلاک ہوگئے۔

یہ واقعہ ہفتے کے روز دارالحکومت عمان کے مغرب میں دس کلو میٹر دور السلط کے مقام پر اس وقت پیش آیا جب فوج نے دہشت گردوں کے ایک ٹھکانے پر چھاپہ مار کرانہیں پکڑنے کی کوشش کی۔

مقامی اخبار ’الغد‘ کے مطابق سیکیورٹی فورسز نے شمالی شہر السلط میں نقب الدبور کے مقام پر ایک مکان میں چُھپے مشتبہ دہشت گردوں پر چھاپہ مارا تو وہاں پرموجود شدت پسندوں نے فائرنگ کی اور دستی بموں سے حملہ کیا۔ حکام کا کہنا ہے کہ نقب الدبور میں چھپنے والے دہشت گردوں نے الفحیص کے مقام پر ایک دستی بم حملے میں سیکیورٹی اہلکار کو قتل کردیا تھا جس کے بعد فوج دہشت گردوں کا تعاقب کر رہی تھی۔

اخباری ویب سائیٹس کے مطابق فائرنگ کے نتیجے میں متعدد افراد زخمی ہوئے ہین تاہم اردنی حکومت کی طرف سے سرکاری طورپر اس پر کوئی رد عمل جاری نہیں کیا گیا۔

قبل ازیں جمعہ کو فوج کی ایک گاڑی پر دستی بم پھینکا گیا تھا جس کے نتیجے میں ایک اہلکار ہلاک اور چھ زخمی ہوگئے تھے۔