.

یمن میں دستوری حکومت کی بحالی کی جدوجہد جاری رکھیں گے: السیسی

’یمن میں غیرعرب طاقتوں کی مداخلت برداشت نہیں کریں گے‘

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے آئینی صدر عبد ربہ منصور ھادی نے گذشتہ روز مصر کے دورے کے دوران اپنے مصری ہم منصب عبدالفتاح السیسی سے قاہرہ میں ملاقات کی۔ ملاقات کے دوران دونوں رہ نماؤں میں یمن کی تازہ صورت حال، خطے اور بین الاقوامی اہمیت کےحامل امور پرتبادلہ خیال کیا گیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق دونوں رہ نماؤں میں خوش گوار ماحول میں تفصیلی بات چیت ہوئی۔ اس موقع پر مصری صدر عبدالفتاح السیسی نے کہا کہ ان کا ملک یمن میں غیر عرب طاقتوں کی مداخلت، ان کے اثرو نفوذ، یمن کو عرب ممالک کے لیے عدم استحکام کا موجب بننے کو مسترد کرتا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ مصربحر الاحمر سے آزادانہ جہاز رانی اور آبنائے باب المندب کےتحفظ وسلامتی کا پرزور حامی ہے۔

ملاقات کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب میں صدر السیسی نے کہا کہ قاہرہ یمن میں استحکام، آئینی حکومت کی عمل داری کی بحالی اور خانہ جنگی کے خاتمے کے لیے جاری عرب مساعی میں مدد جاری رکھے گا۔

اس موقع پر صدر عبد ربہ منصور ھادی نے صدر السیسی کو حوثی ملیشیا کی طرف سے بحر الاحمر میں عالمی جہاز رانی اور عرب قومی سلامتی کو لاحق خطرات کے بارے میں آگاہ کیا۔

یمن کی سرکاری خبر رساں ایجنسی’سبا‘ کے مطابق مصری صدر السیسی نےصدر ھادی سے ملاقات میں یمن میں جنگ کے زخمیوں کے علاج معالجے کے لیے طبی امداد فراہم کرنے اور طبی عملہ فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی۔ اس کے علاوہ یمنی شہریوں کے لیے مصری ویزے کے حصول کو مزید آسان بنانے سمیت دیگر امور پر بھی تفصیلی بات چیت کی گئی۔