سعودیہ میں تبدیلی،فنون وثقافت تنظیم کی سربراہی خاتون کےسپرد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں اصلاحات کے عمل کے تحت فنون ثقافت آرگنائزیشن کی قیادت پہلی بار ایک خاتون کو سونپے جانے کا تاریخی اقدام سامنے آیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سعودی عرب کی آرگنائزیشن برائے فنون وثقافت نے سنہ 1973ء میں اپنے قیام کے بعد پہلی بار ایک خاتون کو سربراہ مقررکیا ہے۔ فنون وثقافت آرگنائزیشن کی قیادت تنظیم کی دارالحکومت الریاض کی برانچ کی چیئرپرسن شہزادی الجوہرہ بنت فیصل بن مساعد کو سونپی گئی ہے۔

سعودی عرب کی فنون وثقافت آرگنائزیشن کا قیام 1973ء کو عمل میں آیا تھا۔ سنہ 1978ء کو اس کے نام میں تبدیلی کی گئی تھی اور اس وقت اس کی پورے سعودی عرب میں 16 شاخیں قائم ہیں۔

درایں اثناء سعودی عرب فنون وثقافت آرگنائزیشن کے چیئرمین بورڈ آف ڈائریکٹرعمرالسیف نے کہا ہے کہ شہزادہ الجوھرہ بنت فیصل کو یہ عہدہ ان کی پیشہ وارانہ مہارت، انتظامی صلاحیتوں اور تنظیم میں فعال کردار ادا کرنے کی بدولت دیا گیا ہے۔ اس اقدام سے سعودی عرب میں زندگی کے مختلف شعبوں میں خواتین کی خدمات کی حوصلہ افزائی ہوگی۔

خیال رہے کہ شہزادی الجوھرہ بن فیصل بن مساعد اعلیٰ تعلیم یافتہ شہری ہیں جو سماجی اور فنی خدمات کی انجام دہی کے ساتھ شہزادہ سلطان یونی ورسٹی میں انگریزی کی لیکچرار ہیں۔ انہوں نے شاہ فیصل یونی ورسٹی سے ایڈمنسٹریشن کے مضمون میں ایم اے اور شہزادہ سلطان یونی ورسٹی سے کمپیوٹر انجینیرنگ میں گریجوایشن کی ڈگریاں لے رکھی ہیں جب کہ انہوں نے کیمرج یونیورسٹی سے انگیرزی زبان وادب کا ڈپلومہ بھی لے رکھا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں