مصری سیٹلائٹ چینلوں کی پہلی نابینا خاتون میزبان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

مصر میں نیشنل کونسل فار ویمن نے ایک مصری سیٹلائٹ چینل کی جانب سے پہلی نابینا خاتون میزبان کے تقرّر کا خیر مقدم کیا ہے۔

کونسل کی سربراہ ڈاکٹر مایا مرسی اور تمام خواتین اور مرد ارکان نے نابینا خاتون میڈیا پَرسن "رضوی محمود" کو مصری چینل "DMC" پر نشر ہونے والے پروگرام "السفیرہ عزیزہ" کی ٹیم میں شامل کیے جانے پر اظہار تشکر کیا ہے۔

کونسل کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ اقدام معاشرے میں معذوری کا شکار خواتین کے لیے کئی میدانوں کا راستہ کھولے گا تا کہ وہ خود کو معاشرے میں کامیابی کے ساتھ ضم ہونے کا ثبوت پیش کر سکیں۔

رضوی محمود پیدائش کے چند روز بعد ایک طبّی غلطی کے سبب اپنی بینائی سے محروم ہو گئی تھیں۔ اس کی وجہ یہ تھی کہ پیدائش کے فوری بعد انہیں جس Incubator میں رکھا گیا وہاں آکسیجن کا تناسب زیادہ ہو گیا تھا۔

رضوی نے نابیناؤں کے لیے مختص اسکول میں داخلہ لے کر وہاں بریل کے ذریعے لکھنا پڑھنا سیکھا۔ یہاں تک کہ اعلی ثانوی بورڈ میں انہوں نے 98% نمبر حاصل کر کے خود کو پوزیشن ہولڈرز کی صف میں شامل کر لیا۔

اس کے بعد رضوی نے میڈیا اسٹڈیز میں گریجویشن مکمل کیا۔ فارغ التحصیل ہونے کے بعد جلد ہی انہوں نے ریڈیو 9090 پر ایک پروگرام "يلا بينا" پیش کیا اور کافی شہرت حاصل کر لی۔ ریڈیو سے وہ سیٹلائٹ چینل "MDC" منتقل ہو گئیں اور اس طرح مصری چینلوں میں کام کرنے والی پہلی نابینا خاتون میزبان بن گئیں۔

رضوی محمود نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ اُن کے اہل خانہ نے تعلیم کے حصول کے سلسلے میں اُن کی بہت حوصلہ افزائی کی۔ رضوی کی والدہ اس بات پر زور دیا کرتی تھیں کہ رضوی جو کچھ یاد کریں اُس کو اپنی آواز میں ریکارڈ بھی کر لیں۔

رضوی کے مطابق اُنہیں ہر گز یقین نہیں آیا تھا کہ نابینا ہونے کے باوجود مذکورہ ریڈیو نے ان کو منتخب کر لیا تھا۔ رضوی کے مطابق ریڈیو کے سینئر ارکان نے اُن کو بھرپور اعتماد فراہم کیا جس کے سبب رضوی کے اندر اپنی معذوری کے حوالے سے موجود خوف دُور ہو گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں