.

اسرائیلی ریاستی دہشت گردی میں مزید تین فلسطینی شہید

مسجد اقصیٰ کو ایک بار پھر سیل کردیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قابض اسرائیلی فوج نے فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی کی مشرقی سرحد پر جمعہ کے روز حق واپسی اور غزہ کی ناکہ بندی کے خلاف احتجاج کرنے والے فلسطینیوں کو گولیاں مار کر تین فلسطینیوں کو شہید کر دیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق جمعہ کو نماز جمعہ کے بعد ہزاروں فلسطینیوں نے غزہ کی مشرقی سرحد پر ’جمعہ انقلاب برائے القدس والاقصیٰ‘ کے عنوان سے ریلیاں نکالیں۔ اس موقع پر اسرائیلی فوج نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے ان پر طاقت کا اندھا دھند استعمال کیا جس کے نتیجے میں 3 فلسطینی شہید اور 240 زخمی ہوگئے۔

فلسطینی طبی ذرائع کے مطابق اسرائیلی فوج نے غزہ میں مشرقی البریج کے مقام پر فلسطینی ریلی پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں 30 سالہ کریم ابو فطایر شہید اور 240 شہری زخمی ہوگئے۔

ادھر مقبوضہ بیت المقدس سے ملنے الی اطلاعات کے مطابق اسرائیلی فوج نے فدائی حملے کی کوشش کے الزام میں دو فلسطینیوں کو گولیاں مار کر شہید کر دیا۔

اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ دو فلسطینیوں نے یہودی آباد کاروں پر چاقو سے حملے کی کوشش کی جس پر انہیں گولیاں مار کرشہید کردیا۔

عینی شاہدین نے بتایا کہ اسرائیلی فوج کی بھاری نفری نے مسجد اقصیٰ میں گھس کر نمازیوں کو زدو کوب کیا اور بعد ازاں مسجد کو نمازیوں کے لیے بند کر دیا گیا۔