.

شام میں داعش پر قابو پانے کے آخری مرحلے کی تیاری میں ہیں : امریکا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بین الاقوامی اتحاد میں امریکی صدر کے نمائندے بریٹ مک گورک نے اعلان کیا ہے کہ امریکا شام میں داعش تنظیم کے خاتمے کے لیے عسکری آپریشن کے آخری مرحلے کی تیاری کر رہا ہے۔

مک گورک نے زور دے کر کہا کہ یہ ایک بہت اہم عسکری کارروائی ہو گی کیوں کہ "داعش" تنظیم کے مسلح عناصر کی ایک بڑی تعداد ابھی تک وہاں موجود ہے۔

امریکی وزارت خارجہ نے جمعے کے روز اعلان کیا تھا کہ واشنگٹن شام سے ایران اور اس کی ہمنوا ملیشیاؤں کو مکمل طور پر نکالے جانے پر کاربند ہے اور امریکا داعش تنظیم پر قابو پانے کا بھرپور ارادہ رکھتا ہے۔

وزارت خارجہ کا کہنا تھا کہ واشنگٹن شام میں اقوام متحدہ کے ایک منظور شدہ سیاسی امن عمل تک پہنچنے کے لیے کوشاں ہے۔ امن عمل تک وصولی کے بعد امریکا شام کے تمام علاقوں میں امدادات بھیجنے پر کام کرے گا۔

امریکی وزارت خارجہ نے سابق سفیر جیمز جیفری کو شام میں رابطے کی بحالی کے امور کا خصوصی مندوب مقرر کیے جانے کا بھی اعلان کیا۔ وہ جنیوا مذاکرات کی روشنی میں اپنے کام پر توجہ مرکوز کریں گے۔

اسی طرح بیان میں بتایا گیا ہے کہ قومی سلامتی کونسل میں سابق ڈائریکٹر 'جو رائبو رن' کو وزارت خارجہ میں شام کے معاملے کا خصوصی ذمّے دار مقرر کیا گیا ہے۔ ان کا منصب نائب معاون وزیر کے مساوی ہو گا۔