.

حماس کی اسرائیل کو ہوائی اڈے کے قیام کی پیش کش کا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطینی تنظیم اسلامی تحریک مزاحمت [حماس] کے سیاسی شعبے کے سینیر رکن موسیٰ ابو مرزوق نےاسرائیل کی طرف سے ایلات میں ہوائی اڈے کے قیام کی پیش کش کی خبروں کومسترد کردیا ہے۔

العربیہ کے مطابق حماس رہ نما نے ایک بیان میں کہا کہ حماس کی طرف سے اسرائیل کو غزہ کی پٹی کے سوا کسی اور علاقے میں ہوائی اڈے کی پیش کش کی گئی اور نہ ہی غزہ کے ملازمین کی اسرائیل کے توسط سے تنخواہوں کی ادائی کی بات کی گئی۔ اسی طرح جنگ بندی کے سلسلے میں اسرائیل کی جانب سے حماس کے سامنے بھی ایسی کوئی تجویز پیش نہیں کی گئی۔

قبل ازیں تحریک فتح کے نائب صدر محمود العالول نے ایک ٹی وی انٹرویو میں کہا تھا کہ اسرائیل نے حماس کےسامنے قبرص کے پلیٹ فارم سے بندرگاہ قائم کرنے اور ایلات کے قریب اسرائیل کی زیرنگرانی ہوائی اڈہ قائم کرنے کی تجویز دی ہے۔ یہ ہوائی اڈہ صرف قطر کی پروازوں کے لیے مختص ہوگا۔

تحریک فتح کے رہ نما کا کہنا تھا کہ غزہ میں جنگ بندی کے محرکات صرف فلسطینی نہیں بلکہ اس میں قطر، ایران اور ترکی جیسے امور بھی شامل ہیں۔ نیز اسرائیل جنگ بندی کے ذریعے اپنے نئے فیصلے مسلط کرنا چاہتا ہے۔