.

اقتصادی رپورٹ پیش کرنے سے انکار پر ’خبرگان کونسل‘ روحانی پر برہم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کی ’خبر گان کونسل‘ کے ترجمان اور سخت گیر شیعہ مذہبی رہ نما احمد خاتمی نے کہا ہے کہ صدر حسن روحانی نے ملک میں ابتر اقتصادی صورت حال کے بارے میں تیار کی گئی رپورٹ کونسل میں پیش کرنے سے انکار کردیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ایران میں ابتر معاشی صورت حال کے حوالے سے حال ہی میں ایک رپورٹ تیار کی گئی تھی مگراسے خبر گان کونسل میں پیش نہیں کیا گیا۔ ایرانی ایوان صدر اور طاقت ور ادارے خبرگان کونسل کے درمیان تناؤ کی کیفیت ایک ایسے وقت میں پیدا ہوئی ہے جب امریکا کی طرف سے تہران پرعاید کردہ پابندیوں کے نتیجے میں ایران بدترین معاشی بحران کا شکار ہے۔

خبر گان کونسل کے ترجمان نے نیوز ایجنسی ‘ارنا‘ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ایرانی صدر حسن روحانی کونسل کو ملک کی معاشی صورت حال اور بحران سے باخبر نہیں کرنا چاہتے۔

ان کا کہنا تھا کہ پارلیمنٹ کے اسپیکر علی لاری جانی اور جوڈیشل کونسل کے سربراہ صادق لاری جانی نے یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ خبر گان کونسل کو ملک کی موجودہ گھمبیر معاشی صورت حال کے بارے میں آگاہ کریں گے۔

خیال رہے کہ ایران کی ’خبر گان کونسل‘ یا گارڈین کونسل ایک طاقت ادارہ ہے۔ اس میں آیت اللہ کے رتبے کے 88 شیعہ مذہبی رہ نما شامل ہیں۔ یہ ادارہ رہبر انقلاب [سپریم لیڈر] کی نگرانی کرتا، اس کے جانشین کا انتخاب کرتا اور اس کی ناکامی کی صورت میں دستوری اور آئینی انتظام سنھبالتا ہے۔ ایرانی صدر بھی اس کونسل کے رکن ہیں۔ حال ہی میں خبر گان کونسل نے ملک کی موجودہ خراب معاشی صورت حال کے حوالے سے تیار کی گئی رپورٹ کونسل میں پیش کرنے کا حکم دیا تھا مگر صدر حسن روحانی نے رپورٹ کونسل میں پیش کرنے سے انکار کردیا۔