.

فلسطینی ریاست کا خواب سبوتاژ نہیں ہونے دیں گے : فتح موومنٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطینی تنظیم "فتح موومنٹ" کی مرکزی کمیٹی کے رکن عزام الاحمد نے مصر کو مصالحتی عمل کا واحد سرپرست قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اُس کی حیثیت منصف کی ہے۔

عزام نے باور کرایا کہ فلسطینی مصالحت کے لیے مصری دستاویز کے جواب میں ایسا کوئی نکتہ نہیں جس کے لیے کسی نئے معاہدے کی ضرورت ہو بلکہ یہ قاہرہ میں ماضی میں دستخط کیے گئے معاہدوں پر ہی مبنی ہے۔

انہوں نے کہا کہ فتح موومنٹ کسی بھی نکتے کو زیرِ بحث لانے کے لیے تیار ہے۔

فتح موومنٹ کے مطابق مصر نے اپنے جواب میں انتہائی مثبت رجحان سے حیران کر دیا۔

موومنٹ نے عزام الاحمد کی زبانی اس امید کا اظہار کیا کہ فتح اور حماس کے بعد مصر مصالحتی معاہدے پر دستخط کرنے والے تمام گروپوں کو دعوت دے گا تا کہ مشترکہ طور پر اس کی تصدیق ہو سکے ،،، جس طرح گزشتہ برس 12 اکتوبر کے معاہدے میں ہوا تھا۔

دوسری جانب فتح موومنٹ کے بعض ذمّے داران کا کہنا ہے کہ فلسطینی تنظیم حماس بالکل مختلف اہداف رکھتی ہے۔ فتح موومنٹ کی مرکزی کمیٹی کے رکن حسین الشیخ کے مطابق حماس کی ترجیحات مختلف ہیں۔ انہوں نے باور کرایا کہ حماس سکون کے ایسے دور کی تھپکی کی جانب بڑھ رہی ہے جس سے غزہ پٹی میں اس کا نظام مضبوط ہو سکے۔ حسین الشیخ نے زور دے کر کہا کہ فتح موومنٹ ایسے کسی بھی رجحان کے خلاف برسرِ جنگ ہو گی جس کا مقصد ریاست کے خواب کو سبوتاژ کرنا ہو۔