.

یمن : ذمار صوبے کے ایک گاؤں میں حوثیوں کے ہاتھوں 60 افراد اغوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں ذمار صوبے کے ضلعے جہران میں حوثی ملیشیا نے الخربہ گاؤں کے درجنوں افراد کو اغوا کر لیا۔ یہ کارروائی مذکورہ گاؤں والوں کے ساتھ جھڑپوں کے ایک روز بعد سامنے آئی ہے۔

قبائلی ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ حوثی ملیشیا کے جتّھوں نے الخربہ گاؤں کے شدید محاصرے کے بعد 60 سے زیادہ شہریوں کو اغوا کر لیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ حوثی ملیشیا نے ان شہریوں کو یرغمال کے طور پر گرفتار کیا اور پھر ذمار کی مرکزی جیل میں ڈال دیا جہاں اُن کے ساتھ جابرانہ انداز سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔

ذرائع نے واضح کیا کہ حوثی ملیشیا کی جانب سے الخربہ گاؤں کے لوگوں کا تعاقب اور گرفتاریوں کا سلسلہ جاری ہے۔ ذمار صوبے میں حوثی ملیشیا کے گورنر محمد حسین المقدشی نے قبائلی شیخ احمد علی قاسم کے گھر جا کر انہیں پابند کیا کہ "مطلوبہ افراد" کو 24 گھنٹوں کے اندر حوالے کر دیا جائے۔

واضح رہے کہ ہفتے کے روز الخربہ گاؤں کے قبائلی افراد اور حوثی ملیشیا کے عناصر کے درمیان جھڑپیں بھڑک اٹھی تھیں۔ جھڑپوں کی وجہ حوثی ملیشیا کی جانب سے الخربہ گاؤں پر دھاوے کی کوشش تھی۔ اس دوران ایک حوثی ہلاک اور نو زخمی ہو گئے۔