سعودی عرب پر حوثی ملیشیا کا ایک اور بیلسٹک میزائل حملہ ناکام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کے فضائی دفاعی نظام نے جمعرات کے روز حوثیوں کی جانب سے نجران شہر کی سمت داغے گئے بیلسٹک میزائل کو فضا میں تباہ کر دیا۔

یمن میں آئینی حکومت کو سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی کے مطابق جمعرات کی شب مقامی وقت کے مطابق 7:50 پر نجران کی جانب آنے والا بیلسٹک میزائل دفاعی نظام کی نظر میں آ گیا۔ یہ میزائل ایرانی نواز حوثی ملیشیا نے یمن کے صوبے صعدہ کی اراضی سے داغا تھا۔

المالکی نے واضح کیا کہ میزائل کے داغے جانے کا مقصد دانستہ طور پر گنجان آباد شہری علاقوں کو نشانہ بنانا تھا۔ سعودی فضائی نظام نے میزائل کو ہدف پر پہنچنے سے پہلے ہی تباہ کر دیا تاہم میزائل کے ٹکڑے لگنے سے 7 افراد معمولی زخمی ہو گئے۔ ان میں دو عورتوں سمیت چار مقامی شہری ، دو بنگلہ دیشی اور ایک بھارتی شہری شامل ہے۔ ان کے علاوہ چند دکانوں اور دو گاڑیوں کو بھی نقصان پہنچا۔

المالکی کے مطابق "ایرانی نواز دہشت گرد حوثی ملیشیا کی جانب سے حالیہ دشمنانہ کارروائی اس بات کا ثبوت ہے کہ تہران ابھی تک مسلح حوثی ملیشیا کو مختلف نوعیتوں سے سپورٹ کر رہا ہے جو کہ اقوام متحدہ کی قرارداد (2216) اور (2231) کو صریح طور پر چیلنج کرنا ہے۔ اس کا مقصد سعودی عرب کے ساتھ علاقائی اور بین الاقوامی امن کو خطرے میں ڈالنا ہے۔ برباد کرنا ہے۔ گنجان آباد شہروں اور دیہات کی سمت بیلسٹک میزائلوں کا داغا جانا بین الاقوامی اور انسانی قوانین کی خلاف ورزی شمار ہوتی ہے"۔

ایران نواز حوثی ملیشیا کی جانب سے اب تک سعودی عرب کی سمت داغے جانے والے بیلسٹک میزائلوں کی مجموعی تعداد 184 ہو چکی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں