.

صعدہ میں ایرانی عسکری ماہرین اور حزب اللہ کے جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے عسکری ذرائع کے مطابق حوثیوں کے مرکزی شہر صعدہ میں گذشتہ دو روز سے جاری لڑائی میں ایرانی عسکری ماہرین اور لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے متعدد اجرتی قاتل بھی ہلاک ہوئے ہیں۔

’العربیہ‘ چینل کویمن کے عسکری ذرائع سے خبر ملکی ہے کہ صعدہ گرنر کےجنوب مغرب علاقے مران سرکاری فوج اور حوثی باغیوں کے درمیان لڑائی جاری ہے۔ پچھلے دو روز میں جاری لڑائی کے دوران حزب اللہ کے متعدد جنگجو اور ایرانی عسکری ماہرین بھی ہلاک ہوئے ہیں۔

خیال رہے کہ صعدہ گورنری میں حوثی باغیوں اور سرکاری فوج کے درمیان ایک ہفتے سے شدید جھڑپیں جاری ہیں۔

ادھر ایک دوسرے با خبر ذریعےنےبتایا ہے کہ حوثی لیڈر عبدالملک الحوثی نے مران میں تازہ کمک پہنچانے کے احکامات دیے ہیں۔ انہوں نے مران میں بڑی تعداد میں جنگجوؤں کی ہلاکتوں کے بعد محاذ پر مزید جنگجو بھیجنے اور عسکری ماہرین کے ذریعے ان کی مدد کرنے کی تاکید کی ہے۔

سرکاری فوج کی طرف سے مران کے علاقے میں تازہ لڑائی کےدوران دسیوں جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔ سرکاری فوج اور عرب اتحادی فوج کی بھرپور کارروائی کے نتیجے میں باغیوں کو بھاری جانی اور مالی نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

خیال رہے کہ ’مران‘ حوثی لیڈر عبدالملک الحوثی کا آبائی شہر ہے۔ سرکاری فوج نے ایک ہفتے سے اس کا محاصرہ کر رکھا ہے۔ یہ علاقہ عبدالملک الحوثی کا آبائی شہر ہونے کے ساتھ جنگ کا آپریشنل کنٹرول روم ہے۔ سنہ 2004 کو حوثی گروپ کے بانی حسین الحوثی کو اسی شہر میں قتل کردیا گیا تھا۔