.

حزب اللہ کو امیر کویت کے خلاف ہرزہ سرائی کی اجازت نہیں دیں گے: قرقاش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مُتحدہ عرب امارات کے وزیر مملکت برائے خارجہ امور انور قرقاش نے ہفتے کے روز ایک بیان میں امیر کویت کی امریکی صدر سے ملاقات کا دفاع کرتے ہوئے لبنانی حزب اللہ کے مقرب ٹی وی چینل کی بلا جواز تنقید کو مسترد کر دیا ہے۔

’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کے مطابق ’ٹوئٹر‘ پر پوسٹ کردہ ٹویٹس میں انور قرقاش کا کہنا ہے کہ امیر کویت خلیجی عوام کی سرکاری اور قومی علامت ہیں۔ وہ اپنے جرات مندانہ اور خصوصی موقف کی وجہ سے خلیجی قیادت میں ممتاز مقام رکھتے ہیں۔ لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے مقرب ٹی وی چینل کی جانب سے امیر کویت کے خلاف ہرزہ سرائی کا جواب دیا جانا چاہیے۔ انہوں نے لبنانی حکومت پر زور دیا کہ وہ حزب اللہ کی طرف سے امیر کویت کو تنقید کا نشانہ بنانے پراپنی خاموشی توڑے۔

اماراتی وزیر مملکت کا کہنا تھا کہ اب وقت آگیا ہے کہ خلیجی قیادت کے خلاف زہرافشانی کا سلسلہ بند کرتے ہوئے بیروت کو لبنان کی کالونی کا کردار ادا کرنے کا سلسلہ ترک کرنا ہوگا۔

خیال رہے کہ حال ہی میں امیر کویت نے امریکا کے دورے کےدوران امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملاقات کی تھی۔ اس ملاقات کے بعد لبنان سے نشریات پیش کرنے والے ایک نجی ٹی وی چینل نے امیر کویت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

کویت کی سرکاری خبر رساں ایجنسی "KUNA" کے مطابق وزارت اطلاعات نے جمعے کے روز اپنے ایک بیان میں باور کرایا کہ "اس میڈیا پرسن نے جو کچھ کہا وہ جھوٹ، پروپیگنڈہ، حقائق میں جعل سازی اور رائے عامّہ کو گمراہ کرنے کی سازش ہے۔ اس دوران حقیقت سے دُور بے بنیاد دعوؤں کے ذریعے شرپسند ارادوں اور خبیث مقاصد کا انکشاف ہو گیا۔ تاہم ان سے لبنان اور کویت کے درمیان برادرانہ اور تاریخی تعلقات پر کوئی آنچ نہیں آئے گی"۔