.

لیبیا : طرابلس میں مسلح ملیشیاؤں کے درمیان فائر بندی کا سمجھوتا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کے دارالحکومت طرابلس میں مسلح ملیشیاؤں کے درمیان فائر بندی پر اتفاق رائے ہو گیا۔ یہ پیش رفت دارالحکومت کے جنوب میں ایک ہفتے سے جاری جھڑپوں کے بعد سامنے آئی ہے۔ جھڑپوں میں درجنوں افراد اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔

منگل کے روز "ٹریپولی پروٹیکشن" فورس کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ اس کے اور دارالحکومت پر حملہ کرنے والے گروپوں کے بیچ فائر بندی پر سمجھوتا طے پا گیا ہے۔ ادھر صلاح بادی کے زیر قیادت "لواء الصمود" نامی ملیشیا نے تاجوراء میں النقلیہ عسکری کیمپ سے انخلاء کا اعلان کر دیا ہے۔

سمجھوتے کے تحت تمام مسلح گروپ دارالحکومت سے باہر نکل کر اپنے مراکز میں لوٹ جائیں گے جب کہ متنازع ٹھکانوں کو "مشترکہ عسکری فورس" کے حوالے کر دیا جائے گا۔ اس فورس کو کچھ عرصہ قبل صدارتی کونسل نے تشکیل دیا تھا تا کہ طرابلس میں سکیورٹی کو یقینی بنایا جا سکے۔

دارالحکومت کے جنوبی حصّوں میں منگل کے روز سے وفاق کی حکومت کی ہمنوا مسلح ملیشیاؤں اور ان کی معاند جماعتوں کے درمیان شدید لڑائی ہو رہی تھی۔ اس دوران مختلف نوعیت کے ہتھیاروں کا استعمال کیا گیا۔ درجنوں میزائل اور راکٹ داغے گئے۔ اس کے نتیجے میں درجنوں ہلاک و زخمی ہوئے اور ہزاروں افراد اپنے گھروں کو چھوڑ کر نقل مکانی کر گئے۔