.

تین عرب ممالک سے ’پیٹریاٹ میزائل‘ سسٹم واپس کرنے کا امریکی فیصلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا نے تین عرب ممالک میں موجود اپنے پیٹریاٹ میزائل سسٹم کوواپس کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ پیٹریاٹ میزائل نظام کی واپسی کی وجہ انہیں اپ گریڈ کرنا اور چین اور روس پر توجہ مرکوز کرنا بتائی گئی ہے۔

بدھ کو امریکی محکمہ دفاع [پینٹاگون] کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ ان کا ملک مشرق وسطیٰ میں تین عرب ملکوں کو دیا گیا پیٹریاٹ میزائل سسٹم واپس کررہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ہماری توجہ کا اگلا مرکز چین اور روس ہیں۔

نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پرامریکی عہدیدار نے ’اے ایف پی‘ کو بتایا کہ پینٹا گون کویت، اردن اور بحرین میں موجود اپنے چار پیٹریاٹ سسٹم واپس کرنے کی تیاری کررہا ہے۔ پیٹریاٹ سسٹم کی واپسی ایک یا دو ماہ کےاندر اندر کردی جائے گی۔ ذرائع کا کہنا تھا کہ جن عرب ممالک سے پیٹریاٹ میزائل سسٹم واپس لیا جا رہا ہے ان کے پاس متبادل دفاعی نظام موجود ہے اور وہ اب کمزور نہیں رہے ہیں۔

خیال رہے کہ پیٹریاٹ میزائل سسٹم ٹیکٹیکل بیلسٹک اور کروز میزائلوں سمیت دیگر میزائل حملوں سے بچانے کا ایک موثر ہتھیار ہے۔ عرب ملکوں کے پاس موجود پیٹریاٹ میزائل سسٹم امریکا کا فراہم کردہ ہے۔

اخبار ’وال اسٹریٹ جرنل‘ کے مطابق عرب ممالک سے پیٹریاٹ سسٹم کی واپسی ایک ایسے وقت میں ہو رہی ہے جب امریکا اور ایران کے درمیان کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے۔ تاہم امریکی عہدیدار کا کہنا ہے کہ عرب ممالک سے پیٹریاٹ سسٹم کی واپسی کا فیصلہ ایران کے ساتھ جاری حالیہ کشیدگی سے پہلے کرلیا گیا تھا۔ اسی حوالے سے امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس سے سوال پوچھا گیا مگر انہوں نے کوئی تبصرہ کرنے سے انکار کردیا تھا۔