.

برطانیہ کا لبنانی حزب اللہ کو کالعدم جماعت قرار دینے پرغور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانیہ کی حکومت نے ایران کو دباؤ میں لانے اور بیرون ملک دہشت گردی کی پشت پناہی سے روکنے کے لیے لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ پر پابندیاں عاید کرنے پر غور شروع کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق برطانیہ نے سنہ 2008ء میں حزب اللہ کے عسکری ونگ پر پابندی عاید کر دی تھی۔ یہ پابندی ابھی تک برقرار ہے۔ برطانوی حکومت تنظیم کے سیاسی شعبے پر پابندی عاید کرنا چاہتی ہے۔ نئے پروگرام کے تحت حزب اللہ کے سیاسی شعبے سمیت تمام ذیلی ادروں اور شعبوں پر پابندی لگانے پر غور کیا جا رہا ہے۔

اخبار ’گارجیئن‘ کے مطابق برطانوی پارلیمنٹ کے متعدد ارکان حزب اللہ پر پابندی کا مطالبہ کر چکے ہیں جب کہ برطانوی وزیر خارجہ جیرمی ہنٹ نے حزب اللہ کو ایران کا بازو قرار دے کر اس کے خلاف موثر اقدامات کا یقین دلایا ہے۔

اخباری رپورٹ کے مطابق حزب اللہ پر پابندیوں کے نفاذ سے برطانوی وزیر داخلہ ساجد جاوید دہشت گردی کی پشت پناہی کرنے والے مراکز کے خلاف کارروائی کا موقع ملے گا۔