ایران میں تین تاجروں کو سزائے موت، 32 کو قید کی سزائیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایران کی ایک انقلاب عدالت نے ’فساد فی الارض‘ کےالزام میں تین کاروباری شخصیات کو سزائے موت بدعنوانی کے الزام میں 32 کو 10 سے 20 سال تک قید کی سزائیں سنائی گئی ہیں۔

ایرانی جوڈیشل کونسل کے ترجمان غلام حسین محسنی ایجی نے خبر رساں ادارے’ارنا‘ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انقاب عدالت کی طرف سے ملزمان کو دی گئی سزاؤں کی توثیق کے لیے کیسزسپریم کورٹ کو ارسال کیے گئے ہیں۔

خیال رہے کہ ایران میں اقتصادی عدالتیں سپریم لیڈر کی اجازت سے جوڈیشل کونسل کےچیئرمین کی طرف سے بنائی گئی ہیں۔ یہ عدالتیں دو ماہ قبل ایرانی کرنسی کی اچانک گراوٹ کے بعد بنا گئی تھیں۔

انسانی حقوق کی تنظیموں نے ایران میں ملزمان کو اندھا دھند پھانسی اور قید کی سزاؤں پر ایرانی رجیم کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

حال ہی میں ایرانی پراسیکیوٹر جنرل عباس جعفر دولت آبادی نے کہا تھا کہ کرنسی کے ساتھ اتارچڑھاؤ کے الزام میں 53 افراد کو حراست میں لیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں