سعودی پبلک انویسٹمنٹ فنڈ نے شمسی توانائی کا منصوبہ معطل کرنے کی تردید کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب کے پبلک انویسٹمنٹ فنڈ کے ایک ذمّے دار ذریعے نے بتایا ہے کہ مملکت کے شمسی توانائی کے منصوبے سے متعلق امریکی اخبار "وال اسٹریٹ جرنل" کی رپورٹ درست نہیں ہے۔ اخبار نے اپنی رپورٹ میں دعوی کیا تھا کہ "سعودی عرب کی جانب سے سوفٹ بینک گروپ کے زیر انتظام 200 ارب ڈالر کے شمسی توانائی کے منصوبے پر کام معطل کیا جا رہا ہے"۔

حال ہی میں جاری ہونے والی اخباری رپورٹوں میں شامل پروپیگنڈے کے جواب میں سعودی پبلک انویسٹمنٹ فنڈ نے واضح کیا ہے کہ شمسی توانائی کے میدان میں سوفٹ بینک گروپ اور دیگر اداروں کے ساتھ اربوں ڈالر کے وسیع اور بڑے منصوبوں پر اب بھی کام جاری ہے۔ سعودی خبر رساں ایجنسی SPA نے فنڈ کے حوالے سے بتایا کہ ان منصوبوں کا باقاعدہ اعلان مناسب وقت پر کیا جائے گا۔

ان کوششوں کے ساتھ مملکت سعودی عرب قابل تجدید توانائی کے شعبے میں اپنی جامع حکمت عملی پر عمل درامد میں آگے بڑھ رہا ہے۔ اس حوالے سے ویژن 2030 پروگرام میں شامل منصوبہ بندی کو پیش نظر رکھا گیا ہے۔ توانائی ، صنعت اور معدنی دولت کی سعودی وزارت مملکت میں متعلقہ فریقوں کے ساتھ رابطہ کاری کے ذریعے توانائی کے سیکٹر میں جامع تبدیلی لانے کے لیے کوشاں ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں