.

خاشقجی کی سابقہ اہلیہ کا بھی "خدیجہ" کے بارے میں لا علمی کا اظہار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی صحافی جمال خاشقجی کے استنبول میں لاپتا ہونے کے بعد سے اُن کی سابقہ اہلیہ ڈاکٹر آلاء نصیف نے خاموشی اختیار کر رکھی تھی تاہم آج انہوں نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے اپنے سابق شوہر کے بارے میں بات کر ہی ڈالا۔

آلاء نصیف نے جمال خاشقجی کی منگیتر ہونے کی دعوے دار خاتون "خدیجہ" کے حوالے سے بتایا کہ "میں نے پہلے کبھی یہ نام نہیں سُنا۔ جمال کے گھر والے بھی اس خاتون کو نہیں جانتے۔ یہاں تک کہ جمال کے بیٹے عبداللہ کو بھی اس کا کچھ علم نہیں جو جمال کی گم شدگی سے قبل دو ہفتے ترکی میں اپنے والد کے ساتھ رہا تھا۔ اگر خدیجہ ،،، جمال کی زندگی میں ہوتی تو اُسے سب سے پہلے میں جانوں گی مگر وہ جمال کی زندگی میں کبھی نہیں رہی"۔

آلاء نصیف نے انکشاف کیا کہ وہ جمال کے آلات کے خدیجہ کے ساتھ ہونے پر حیران ہیں اور اس بات پر بھی کہ سوشل میڈیا پر اس سعودی صحافی کے اکاؤنٹس ابھی تک دستیاب ہیں اور ان کے ساتھ کھلواڑ جاری ہے۔

آلاء کے مطابق انہیں جمال کے امریکا سے ترکی منتقل ہونے کا کوئی علم نہیں۔ جمال نے انہیں اس بارے میں آگاہ نہیں کیا اور نہ آلاء کو اس کی وجہ معلوم ہے۔

یاد رہے کہ سعودی صحافی جمال خاشقجی کے سب سے بڑے بیٹے صلاح نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کے ساتھ گفتگو میں یہ بتا چکے ہیں کہ وہ نہیں جانتے کہ خدیجہ نامی خاتون کون ہے اور انہوں نے میڈیا کے ذریعے ہی یہ نام سُنا ہے۔ خاشقجی کے بیٹے نے ترک خاتون خدیجہ سے مطالبہ کیا کہ وہ ان کے والد کے معاملے پر گفتگو نہ کرے۔

صلاح نے باور کرایا کہ ان کے خاندان کے تمام لوگ سعودی عرب کی سرکاری تحقیقات کو سپورٹ کرتے ہیں اور اسی کے ذریعے "مثبت نتائج اور حقیقت سامنے آئے گی"۔