.

ایران کا اھواز حملے کے ماسٹر مائنڈ کو عراق میں ہلاک کرنے کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی سپاہ پاسداران انقلاب نے دعویٰ کیا ہے کہ ایرانی فوج نے اھواز شہر میں گذشتہ ماہ ہونے والی ایک فوجی پریڈ پرحملے کے منصوبہ ساز کو عراق میں ہلاک کردیا ہے۔ اھواز میں ہونے والی کارروائی میبں 25 افراد ہلاک ہوگئے تھے جن میں زیادہ تر فوجی تھے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق پاسداران انقلاب کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ایرانی فوج نے عراق میں ایک کارروائی کےدوران "داعش" کے دہشت گرد "ابو زھا" اور اس کے چار ساتھیوں کو ہلاک کردیا۔ یہ کارروائی عراق کے صوبہ دیالی میں کی گئی۔

ایرانی کا دعویٰ‌ہے کہ ابوزھا نامی دہشت گرد نے اھواز میں ایرانی فوجی پریڈ پر حملے کا منصوبہ تیار کیا تھا۔

یاد رہے کہ 22 ستمبر 2018ء کو ایران کے شہر اھواز میں ایک پریڈ کے دوران متعدد مسلح افراد نے اچانک حملہ کردیا تھا جس کے نتیجے میں 25 افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہوگئے تھے۔ جوابی کارروائی میں چاروں حملہ آور بھی ہلاک ہوگئے تھے۔

ایران کی مسلح افواج کے ترجمان جنرل عبد الفضل شکرجی نے سرکاری ٹیلی ویژن کو بتایا کہ چار حملہ آوروں میں سے تین کو فوری طور پر جہنم رسید کردیا گیا جب کہ چوتھا کچھ دیر کے بعد ان سے جا ملا۔