.

یمن کی سیاسی قوتوں کی سعودی عرب کے خلاف جاری شرانگیز مہم کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی سرکردہ سیاسی جماعتوں نے سعودی عرب کے خلاف جاری منظم شرانگیز مہم کی شدید مذمت کرتے ہوئے الریاض کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کیا ہے۔

یمن کی مختلف سیاسی جماعتوں نے ایک مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ مملکت کے خلاف جاری گمراہ کن، منفی اور مکروہ منفی پروپیگنڈے پر انہیں بے حد تشویش ہے۔ اس مہم کا مقصد سعودی عرب کے علاقائی اور عالمی کردار کو محدود کرنا اور عرب اور اسلام کے لیے سعودی عرب کی خدمات کو ختم کرنےکی کوشش کرنا ہے۔ یمن کی تمام سیاسی قوتیں سعودی عرب کے ساتھ کھڑی ہیں اور مملکت کے خلاف جاری مکروہ مہم کی شدید الفاظ میں مذمت کرتی ہیں۔

مشترکہ بیان پر جنرل پیپلز کانگریس، یمنی سوسائٹی پارٹی برائے اصلاح، اشتراکی پارٹی، الناصری جماعت، انصاف وترقی پارٹی، یمنی الرشاد پارٹی، تحریک النہضہ برائے امن، البعث پارٹی، قومی یکجہتی فورم، امن وترقی پارٹی،یمن جمہوری پارٹی اور دیگر جاعتوں کے رہ نمائوں کے دستخط ثبت ہیں۔

بیان میں سعودی عرب کی توہین پر مبنی مہم پر ریاض کا ساتھ دینے پر زور دیاگیا ہے اور کہا گیا ہے کہ عرب ممالک اور عالم اسلام کو موجودہ حالات میں سعودی عرب کی پشت پر کھڑا ہونا چاہیے اور سعودی عرب کے خلاف جاری شر انگیز مہم کی روک تھام کے لیے کردار ادا کرنا چاہیے۔

خیال رہے کہ سعودی عرب کے صحافی جمال خاشقجی کی ترکی میں سعودی قونصل خانے میں 2 اکتوبر سے پراسرار گم شدگی کے بعد سعودی عرب کو سخت تنقید کا سامنا ہے۔ بعض ذرائع ابلاغ سعودی عرب پر جمال خاشقجی کو دھوکے سے قونصل خانے بلا کر قتل کرنے کا الزام عاید کرتے ہیں۔ تاہم سعودی عرب نے ان تمام الزامات کو بے بنیاد قرار دیا ہے۔