.

روس کا امریکا پر"داعش" کو شام سے عراق اور افغانستان منتقل کرنے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روسی وزیر خارجہ سیرگی لافروف نے الزام عاید کیا ہے کہ امریکا شام میں موجود "داعش" کے جنگجوئوں کو افغانستان اور عراق منتقل کررہا ہے۔

روسی اور فرانسیسی ذرائع ابلاغ سے بات کرتے ہوئے لافروف نے کہا کہ ہمارے لیے یہ بات باعث تشویش ہے کہ امریکا داعشی جنگجوئوں کو شام سے عراق اور افغانستان بھیج رہا ہے۔ ان کاکہنا تھا کہ ہمارے پاس اس دعوے کے ٹھوس شواہد موجود ہیں۔

روسی وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ ہمیں ایسی دستاویزات ملی ہیں جن سے معلوم ہوتا ہے کہ افغانستان کو داعش میں پھلنے پھولنے کا ایک نیا پروگرام تیار کیا جا رہا ہے اور اس پروگرام میں امریکا بھی پیش پیش ہے۔

انہوں‌ نے کہا کہ بہت سے قرائن اس بات کی نشاندہی کرتے ہیں کہ واشنگٹن داعش کے جنگجوئوں کو شام سے عراق اور افغانستان اسمگل کررہا ہے۔ انہوں‌نے امریکا اور دیگر عالمی اداروں سے مطالبہ کیا کہ وہ داعش کو عراق اور افغانستان میں منظم کرنے سے متعلق شبہات کا ازالہ کریں یا اس کی وضاحت کریں۔

سیرگی لافروف کا کہنا تھا کہ افغانستان دہشت گردوں کے پنپنے کی بہترین جگہ ثابت ہوسکتا ہے۔ جغرافیائی تقسیم کے ساتھ ساتھ یہاں پر فرقہ وارانہ تقسیم کافی گہری ہے جو دہشت گردوں اور انتہا پسندوں کو آسانی کے ساتھ اپنے اندر جذب کرلے گی۔

خیال رہے کہ روس اس سے قبل بھی افغانستان میں داعش کی " خفیہ مدد" کا الزام عاید کرتا رہا ہے جب کہ امریکا روس پر طالبان کی حمایت کا الزام عاید کرتا ہے۔