اسرائیل اور غزہ پٹی کے درمیان دو گزر گاہوں کو پھر سے کھول دیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسرائیلی وزیر دفاع ایوگڈور لیبرمین نے اتوار کے روز غزہ پٹی کے ساتھ سرحد پر دو گزر گاہوں کو افراد اور سامان کے لیے دوبارہ کھول دینے کا حکم جاری کر دیا۔ دونوں گزر گاہوں کو غزہ پٹی سے اسرائیل کے جنوبی علاقے پر راکٹ داغے جانے کے بعد چار روز قبل بند کر دیا گیا تھا۔

لیبرمین کے دفتر سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ افراد کے لیے ایریز کراسنگ اور سامان کے لیے کرم ابو سالم کراسنگ کھولنے کا فیصلہ غزہ پٹی میں پر تشدد کارروائیوں میں کمی اور حماس کی جانب سے مظاہرین کو قابو میں رکھنے کی کوششوں کے بعد کیا گیا ہے۔

اس سے قبل مشرق وسطی کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی نکولا ملادینوف نے غزہ پٹی میں ایک نئے تباہ کن تنازع کے بھڑکنے کے امکان سے خبردار کیا تھا۔

ملادینوف نے اپنے خطاب میں کہا کہ غزہ پٹی برباد ہو رہی ہے اور تمام انسانی ، اقتصادی ، سکیورٹی اور سیاسی اشاریے مسلسل تنزّلی کی جانب جا رہے ہیں۔

اقوام متحدہ کے ایلچی نے خبردار کیا تھا کہ اگر تمام فریقوں نے کشیدگی کم کرنے کے لیے واضح اقدامات نہ کیے تو اس کے الم ناک نتائج سامنے آ سکتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں