بلوٹ چیمپین شپ : عمر رسیدہ سعودی نے 20 ہزار کھلاڑیوں کو چیلنج کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

چند روز قبل سعودی دارالحکومت ریاض میں عوامی سطح پر انتہائی مقبول کارڈ گیم "بلوٹ" کی چیمپین شپ کا آغاز ہوا۔ اس چیمپین شپ میں 79 سالہ عمر رسیدہ سعودی شہری فہد السیف بھی شرکت کر رہے ہیں۔ چیمپین شپ کے لیے 256 میزیں سجا دی گئی ہیں جب کہ ایونٹ کے لیے 20 ہزار سے زیادہ کھلاڑیوں نے اپنے ناموں کا اندراج کروایا ہے۔

فہد السیف کا کہنا ہے کہ یہ ایونٹ ایک بہترین موقع ہے کہ وہ بلوٹ کے کھیل میں اپنے 60 سالہ تجربے اور مہارت سے فائدہ اٹھاتے ہوئے اس چیمپین شپ کو اپنے نام کریں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے فہد نے بتایا کہ وہ بلوٹ کے کھیل کے دیوانے ہیں اور 1383 ہجری سے اسے کھیل رہے ہیں۔ فہد کے مطابق اُنہیں اس چیمپین شپ کا معلوم ہوا تو انہوں نے ایونٹ میں شرکت کر کے دیگر کھلاڑیوں کو چیلنج کرنے کا فیصلہ کیا۔ فہد بتاتے ہیں کہ ابتدائی راؤنڈز میں انہوں نے اپنے بیٹے محمد السیف کے ساتھ شرکت کی اور ہر مرتبہ جیت کو گلے لگایا۔

فہد السیف ہر ہفتے سدیر کے تفریحی مقام پر اپنے خاندان کے ہمراہ جمع ہوتے ہیں اور وہاں سب کے ساتھ بلوٹ کے کھیل کا مزہ لیتے ہیں۔ فہد کا کہنا ہے کہ "میں مملکت کی سطح پر بلوٹ کی اس چیمپین شپ میں شرکت پر فخر محسوس کر رہا ہوں۔ مجھے ایسا محسوس ہو رہا ہے کہ میں پھر سے نوجوان ہو گیا ہوں اور میں نے اپنی بڑ یعمر کو پیچھے کر دیا۔ اس صحت اور عافیت کی نعمت پر میں اللہ تعالی کا شکر بجا لاتا ہوں"۔

اپنی پیشہ وارانہ زندگی کے بارے میں فہد بتاتے ہیں کہ انہوں نے سوشل ورک کے میدان میں ڈپلومہ حاصل کیا تھا۔ تاہم عملی طور پر وہ 28 برس تک ریاض میں عثمان بن عفان پرائمری اسکول کے ساتھ بطور معلم وابستہ رہے۔

دوسری جانب سعودی عرب میں برقی اور دماغی کھیلوں کی فیڈریشن کے سکریٹری جنرل ترکی الفوزان نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ بلوٹ کی یہ چیمپین شپ 17 اکتوبر کو شروع ہوئی اور 27 اکتوبر تک جاری رہے گی۔ انہوں نے بتایا کہ ایونٹ میں 20 ہزار سے زیادہ کھلاڑی حصّہ لے رہے ہیں اور انعامات کی مجموعی رقم بیس لاکھ ریال ہے۔ الفوزان کے مطابق مملکت میں انتہائی مقبول کھیل ہونے کی وجہ سے اس چیمپین شپ میں شرکت کے لیے ایک لاکھ سے زیادہ درخواستیں موصول ہوئیں۔ انہوں نے بتایا کہ سعودی عرب میں اسپورٹس کی جنرل اتھارٹی اور برقی اور دماغی کھیلوں کی فیڈریشن اس بات پر غور کر رہی ہیں کہ ایونٹ میں شرکت کے تمام خواہش مندوں کو موقع فراہم کیا جائے ،،، اور اس کے لیے محض دارالحکومت ریاض کے بجائے مملکت کے تمام شہروں میں چیمپین شپ کا انعقاد کیا جائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں