.

مقتدی الصدر نے نئی حکومتی تشکیل کے خلاف خفیہ لابیوں کی مخالفت کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے نامزد وزیراعظم عادل عبدالمہدی آج بدھ کی شام عراقی پارلیمنٹ کے سامنے اپنی حکومتی تشکیل کو پیش کریں گے۔ اس دوران ممکنہ "پارلیمانی لابیوں" کے متعلق خبریں گردش میں آ رہی ہیں جن کا مقصد مذکورہ تشکیل کے خلاف خفیہ رائے شماری ہے۔ دوسری جانب عراقی رہ نما مقتدی الصدر نے کہا ہے کہ وہ اس طرح کی رائے شماری یا لابیوں کے خلاف ہیں۔

اس سے قبل بدھ کے روز اپنی ٹوئیٹ میں الصدر نے ایک بار پھر اس موقف کو دہرایا کہ وہ حکومتی تشکیل میں پرانے ناموں اور چہروں کی مخالفت کرتے ہیں۔

نامزد وزیراعظم عبدالمہدی بھی منگل کے روز حکومتی پروگرام پیش کرنے کے دوران اسی موقف کو باور کرا چکے ہیں۔

مقتدی الصدر نے کہا کہ عراقی عوام حکمراں نظام کی اصلاح کے شدّت سے خواہاں ہیں۔ انہوں نے اپیل کی کہ ایسی ٹکنوکریٹ حکومت لائی جائے جو نامزد وزیراعظم کی نگرانی میں سیاسی جماعتوں اور بلاکوں کے دباؤ کے بغیر کام کرے۔

مقتدی الصدر نے تمام پارلیمانی بلاکوں سے اپیل کی کہ وہ عبدالمہدی پر دباؤ ڈالنے سے گریز کریں۔

یاد رہے کہ نامزد وزیراعظم نے منگل کے روز اپنا حکومتی پروگرام پیش کیا۔ انہوں نے انتخابی استحقاق کے مطابق وزراء کے چُناؤ میں آزادی دینے پر سائرون، النصر، الحکمہ اور الفتح گروپوں کا شکریہ ادا کیا۔