.

مصر:وکیل نے ڈائس پرچڑھ کرجج کو جوتا دے مارا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصرمیں مقدمات کی سماعت کے دوران ایک وکیل نے جج سے کسی بات پر اختلاف کرنے کے بعد ڈائس پر چڑھ کر اسے جوتا دے مارا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق یہ واقعہ جنوبی مصر کی المنیا گورنری میں ملوی اپیل کورٹ میں پیش آیا۔

المنیا گورنری کے سیکیورٹی ڈائریکٹرمیجر جنرل مجدی عامر انہیں عمرو نامی ایک ایک وکیل کی جانب سے جج پرچڑھائی کی اطلاع ملی ہے۔ وکیل نے سابقہ اختلافات کی بناء پر ڈائس پرچڑھ کر جج کو جوتا دے مارا۔

انہوں ‌نے بتایا کہ دونوں کے درمیان پہلے سے اختلافات چل رہے تھے۔ جج نے وکیل کو گرفتار کرکے اپنے سامنے پیش کرنے کا حکم دیاتھا۔ دوسری جانب وکیل نے سوشل میڈیا پرمخالف جج کی کردار کشی کی مہم شروع کر رکھی تھی اور الزام عاید کیا تھا کہ جج بیوہ عورتوں، خواتین اور بے گناہ شہریوں کے خلاف ظالمانہ فیصلے صادر کر رہا ہے۔

پولیس نے ملزم کو حراست میں لے لیا ہے اور چار روز تک کا ریمانڈ حاصل کرنے کے بعد تفتیش شروع کردی ہے۔

درایں اثناء مصر کے جوڈیشل کلب کی طرف سے جاری ایک بیان میں جج کو جوتا مارنے کی شدید مذمت کی ہے۔ جوڈیشل کلب کے ترجمان رضا محمود السید نے ایک بیان میں کہا کہ ایک جج کو جوتا مارا کسی ایک فرد کی توہین نہیں بلکہ یہ پوری ریاست اور عدلیہ کی توہین کے مترادف ہے۔