.

یمن: حوثی ملیشیا کا سرغنہ مران کے علاقے میں محصور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے صوبے صعدہ میں سرکاری فوج کی پیش قدمی جاری ہے اور اس دوران صوبے کے مغربی علاقے مران میں حوثی ملیشیا کے گڑھ کا محاصرہ کر لیا گیا ہے۔

اس حوالے سے یمنی فوج کے تھرڈ بریگیڈ کے کمانڈر عبدالکریم السدعی نے جمعے کے روز تصدیق کی ہے کہ یمنی فوج مران کے تمام علاقوں اور وادیوں میں کئی سمتوں سے داخل ہو گئی۔ اس کے بعد علاقے میں موجود حوثی ملیشیا مکمل طور پر محصور ہو چکی ہے۔

السدعی نے پورے وثوق سے کہا کہ حوثی ملیشیا کا سرغنہ مران سے فرار نہیں ہوا اور ابھی تک علاقے میں محصور ہے۔ انہوں نے بتایا کہ یمنی فوج نے چھ سے زیادہ تزویراتی سپلائی لائنوں پر کنٹرول حاصل کر لیا ہے جو حوثیوں کی جانب سے محاذ پر کمک پہنچانے کے حوالے سے مرکزی سپلائی لائنیں تھیں۔ اس پیش رفت کے بعد اب حوثی ملیشیا کے پاس صرف ایک سپلائی لائن باقی رہ گئی ہے۔

ادھر یمنی فوج نے اتحادی طیاروں کی براہ راست معاونت کے ذریعے باقم ضلعے میں العتیم کے پہاڑی علاقے میں کئی نئے ٹھکانے آزاد کرا لیے۔ اس عکسری کارروائی میں حوثی ملیشیا کے درجنوں ارکان ہلاک اور زخمی ہو گئے۔ مارے جانے والوں میں وہ نشانچی بھی شامل ہیں جو العتیم کے پہاڑوں میں غاروں اور چٹانوں کی خندقوں کے اندر چھپے ہوئے تھے۔