.

مصر: مسیحی ڈاکٹر کے داعشی قاتل کو سزائے موت کا حکم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کی ایک فوجی عدالت نے انسداد دہشت گردی قانون کے تحت ایک مسیحی ڈاکٹر کے قتل میں ملوث "داعشی" شدت پسند کو سزائے موت دینے کا حکم دیا ہے۔

خبر رساں اداروں کے مطابق ہفتے کے روز مصری عدالت کے فیصلے کو مفتی اعظم کو بھیجا گیا ہے۔ مفتی اعظم کی رائے پرعمل درآمد ناگزیر نہیں۔

تفصیلات کے مطابق ستمبر 2017ء کو 40 سالہ شخص نے مریض بن کر 82 سالہ عیسائی ڈاکٹر کو چاقو کے وار کرکے قتل کر دیا تھا۔ ملزم نے نہ صرف ڈاکٹر کو چاقو کے وار سے قتل کیا بلکہ کمرے میں داخل ہونے والے اس کے معاون پر بھی چاقو کے وار کیے تھے۔

مصری پراسیکیوٹر جنرل کا کہنا ہے کہ ملزم انتہا پسندانہ نظریات رکھتا ہے اور اس کا جزیرہ نما سیناء میں سرگرم داعش کے گروپ کے ساتھ تعلق رہا ہے۔