.

عراقی طیاروں کی شام میں داعش کے ٹھکانوں پر بمباری ، اسلحہ ڈپو تباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق نے پڑوسی ملک شام میں سخت گیر جنگجو گروپ داعش کے ٹھکانوں پر فضائی حملہ کیا ہے۔عراقی فوج نے منگل کے روز ایک بیان میں کہا ہے کہ ایف 16 لڑاکا طیاروں نے داعش کے زیر استعمال دو عمارتوں پر بمباری کی ہے اور وہاں ایک اسلحہ ڈپو کو تباہ کردیا ہے۔ان دونوں عمارتوں میں داعش کے چالیس جنگجو موجود تھے۔

اس نے مزید بتایا ہے کہ ایف 16 لڑاکا طیاروں نے داعش کی ایک عمارت کو بمباری کرکے تباہ کردیا ۔وہاں داعش کے جنگجو اسلحہ رکھ رہے تھے اور فضائی حملے میں دس جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔دوسرے حملے میں تباہ ہونے والی عمارت میں تیس جنگجو موجود تھے۔ عراقی فوج کا کہنا ہے کہ ان حملوں میں داعش کے ایک اسلحہ ڈپو کو تباہ کردیا گیا ہے۔

داعش نے عراق میں شکست کے بعد اب شام کے سرحدی علاقے میں اپنے ٹھکانے بنا رکھے ہیں۔ 2014ء کے بعد ایک وقت میں داعش کا عراق کے ایک تہائی علاقے پر قبضہ تھا لیکن گذشتہ دو سال کے دوران میں عراقی سکیورٹی فورسز نے اس سخت گیر جنگجو گروپ کے زیر قبضہ تمام علاقے واپس لے لیے ہیں۔

سابق عراقی وزیراعظم حیدر العبادی نے گذشتہ سال دسمبر میں داعش کے خلاف جنگ میں حتمی فتح کا ا علان کیا تھا۔ اس جنگجو گروپ کو شام میں بھی شکست سے دوچار ہونا پڑا ہے اور اب بہت تھوڑا علاقہ اس کے قبضے میں رہ گیا ہے۔

عراق اور شام میں شکست کے بعد سے داعش نے گوریلا جنگی حربے استعمال کرنا شروع کردیے ہیں اور اس کے جنگجو وقفے وقفے سے عراق کے مختلف علاقوں میں خودکش بم حملے یا بم دھماکے کرتے رہتے ہیں۔عراقی فضائیہ نے گذشتہ سال سے شامی صدر بشارالاسد او ر امریکا کی قیادت میں داعش مخالف اتحاد کی منظوری کے بعد شام میں اس جنگجو گروپ کے خلاف متعدد فضائی حملے کیے ہیں۔