.

مصری جیل سے قیدی 45 سال کے بعد رہا

رہائی صدارتی فرمان کے تحت عمل میں لائی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصری حکام نے صدر کی جانب سے سزا کی معافی کے حکم کےتحت 45 سال سے قید ایک مصری سمیت 237 قیدیوں کو رہا کردیا۔

مصری وزارت داخلہ کی رپورٹ کے مطابق صدر کی طرف سے 237 قیدیوں کی سزا معاف کردی تھی جس کے بعد انہیں رہا کردیا گیا۔ ان میں ایک ایسا قیدی بھی شامل ہے جو 45 سال سے جیل میں بند تھا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ جنگ اکتوبر کی یاد میں صدر کی جانب سے قیدیوں کی سزا میں تخفیف کا ایک فرمان جاری کیا گیا۔ اس فرمان کے تحت اڑھائی سو کے قریب قیدیوں کی سزائے قید معاف کی گئی۔

مسلسل 45 سال تک جیل میں قید رہنے والےشخص کے بارے میں مزید تفصیلات سامنے نہیں آئیں۔

خیال رہے کہ صدر عبدالفتاح السیسی سابق صدور کی نسبت قیدیوں کی سزائیں معاف کرنے میں زیادہ فراخ دلی کا مظاہرہ کرتے ہیں اور وہ ہرقومی موقع یا عید پر قیدیوں کی سزائیں معاف کرتے ہیں۔