.

حزب اللہ کی سرنگیں دہشت گردوں کو ہمارے ملک میں داخل کرنے کا حربہ ہے:نیتن یاھو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو نے کہا ہے کہ لبنان کی سرحد پر حزب اللہ ملیشیا کی کھودی گئی سرنگوں کا مقصد دہشت گردوں کو ہمارے ملک میں داخل کرانا ہے۔

اسرائیلی وزیراعظم نے کہاکہ ہم نے سرحد پر موجود سرنگوں کے بارے میں چند روز قبل فیصلہ کیا اور منگل کو اس پرعمل درآمد کیا گیا۔ انہوں‌نے کہا کہ جب تک ضرورت ہوگی حزب اللہ کی سرنگوں کے خلاف آپریشن جاری رکھا جائے گا۔

خیال رہے کہ اسرائیلی فوج نے گذشتہ روز یہ دعویٰ‌کیا تھا کہ اس نے لبنان کی سرحد پر حزب اللہ کی کھودی گئی سرنگوں کی نشاندہی کی ہے۔ فوج کا کہنا ہے کہ سرحد پر حزب اللہ کی سرنگوں کی موجودگی کی ذمہ دار لبنانی حکومت ہے اور یہ قرارداد 1701ء کی کھلی خلاف ورزی ہے۔

منگل کے روز جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ اسرائیلی اراضی کے اندر کی جانب کھو دی جانے والی مذکورہ سرنگوں کو منہدم کرنے کے لیے اسرائیلی فوج کی جانب سے پیر کی شب کارروائی کی گئی۔ بیان کے مطابق ان سرنگوں کی کھدائی کے پیچھے دہشت گرد تنظیم حزب اللہ کھڑی ہے۔ اس مقصد کے لیے حزب اللہ کو ایران کی حمایت اور مالی فنڈنگ حاصل ہے تا کہ لبنانی ملیشیا اسرائیل کے خلاف سرگرمیوں کا دائرہ پھیلا سکے"۔

اسرائیلی فوج نے بتایا کہ شمالی کمان کے کمانڈر میجر جنرل یُوال اسٹریک اس عسکری مہم کی قیادت کر رہے ہیں۔ آپریشن میں اسرائیلی فوج کی بڑی نفری شریک ہے۔ فوجی بیان کے مطابق سرنگوں کی کھدائی اسرائیل کے شہریوں کے لیے فوری خطرہ اور اسرائیلی سیاست کی واضح خلاف ورزی ہے۔

ادھر امریکا نے لبنان کی سرحد پر اسرائیلی فوج کے لبنانی حزب اللہ کی سرنگوں کے خلاف آپریشن کی مکمل حمایت کی ہے۔