مصر : الاخوان المسلمون کے مرشدِ عام کو ایک اور عمر قید کی سزا کا حکم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کی ایک فوجداری عدالت نے کالعدم مذہبی سیاسی جماعت الاخوان المسلمون کے مرشد عام محمد بدیع سمیت چھے افراد کو تشدد کی شہ دینے اور جنگجوؤں کو مادی مدد دینے کے الزامات میں قصور وار قرار دے کر عمر قید کی سزائیں سنائی ہیں۔

قاہرہ کی فوجداری عدالت نے محمد بدیع اور پانچ دیگر افراد کو جنگجوؤں کو ہتھیار اور گولہ بارود مہیا کرنے کے الزامات میں مجرم ٹھہرایا ہے۔وہ اپنی سزاؤں کے خلاف اعلیٰ عدالت میں اپیل دائر نہیں کرسکتے۔

عدالت نے اسی مقدمے میں ماخوذ الاخوان المسلمون کے چھے لیڈروں کو بری کردیا ہے۔ان میں مصری پارلیمان کے سابق اسپیکر سعد الکتاتنی بھی شامل ہیں۔

مجرم قرار دیے گئے الاخوان کے لیڈروں پر2013ء میں قاہرہ کے علاقے المقطعم میں واقع جماعت کے ہیڈ کوارٹرز کے باہر ہنگاموں ، تشدد اور قتل کی شہ دینے کے الزامات میں فرد جرم عاید کی گئی تھی۔اخوان کے صدر دفاتر کے باہر جھڑپوں میں نو افراد ہلاک 91 زخمی ہوگئے تھے۔

واضح رہے کہ الاخوان کے مرشدعام محمد بدیع کو 2013ء میں گرفتار کیا گیا تھا۔انھیں تب سے مختلف مقدمات میں مجرم ٹھہرا کر کئی مرتبہ موت اور عمر قید کی سزائیں سنائی جاچکی ہیں۔ان پر ریاست کے خلاف حملوں کی منصوبہ بندی کرنے اور تشدد کی شہ دینے کے الزامات عاید کیے گئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں