.

حزب اللہ کے معاونت کار کا ایران کے خلاف امریکی پابندیاں ناکام بنانے کا اعتراف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزارت انصاف کے مطابق لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے ایک مالی معاونت کار قاسم تاج الدین نے اعتراف کیا ہے کہ ایران کے خلاف امریکی پابندیوں کو ناکام بنانے اور امریکی کمپنیوں کے امور میں مداخلت کے جرم کا مرتکب ہوچکا ہے۔

مئی 2009ء کو تاج الدین کو امریکا نے حزب اللہ کا اہم ترین مالی معاونت کار قرار دیا تھا۔ امریکا نے حزب اللہ کو دہشت گرد تنظیم قراردینے کےبعد 63 سالہ تاج الدین کے ساتھ کسی قسم کے لین دین پر پابندی لگا دی گئی تھی تاہم اس نے دعویٰ کیا ہے کہ امریکی پابندیوں کو غیر موثر بنانے کے لیے امریکی کمپنیوں کے ساتھ لین دین کرتا رہا ہے۔

امریکی وزارت انصاف کے مطابق تاج الدین نے پانچ دوسرے افراد کےساتھ مل کر امریکی کمپنیوں کے ساتھ جعل سازی کے ذریعے 50 ملین ڈالرکا لین دین کیا تھا۔

مارچ 2017ء کو امریکی پولیس نے تاج الدین کودارالبیضاء میں پولیس نے امریکا کی درخواست پر حراست میں لے لیا تھا۔ اس کے خلاف امریکا کی عدالتوں میں مقدمہ چلایا جارہا ہے۔ جنوری 2019ء میں اس پر فرد جرم عاید کیے جانے کا امکان ہے۔