.

غیرحاضری کا الزام، حوثیوں نے جامعہ صنعاء کے 117 اساتذہ فارغ کر دیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں سرگرم حوثی باغیوں نے دارالحکومت صنعاء کی سب سے بڑی درس گاہ 'جامعہ صنعاء' کے مزید 117 ملازمین فارغ کردیے۔ ان میں بیشتر یونیورسٹی کے اساتذہ ہیں۔ حوثیوں‌نے انہیں ملازمت سے نکالنے کے لیے ڈیوٹی سے غیرحاضر رہنے کا ایک جعلی بہانا تراشا ہے جس کی آڑ میں ناپسندیدہ شخصیات کو نکال کر ان کی جگہ من پسند عناصر کی تعیناتی کی راہ ہموار کرنا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق صنعاء یونیورسٹی کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ جامعہ سے منسلک 117 اساتذہ اور دیگر عملے کوملازمت سے نکال دیا گیا۔ یہ اقدام ان کی مسلسل غیرحاضری کی وجہ سے کیا گیا۔

یونیورسٹی میں "لینگویج کالج" کے کے معاون خصوصی محمد القاضی نےحوثیوں کے فیصلے کواساتذہ کا "اجتماعی معاشی قتل" قرار دیا۔

خیال رہےکہ اکتوبرکے اوائل میں جامعہ صنعاء کی گورننگ باڈی نے اغواء سے ڈر سے شہر سے چلے جانے والے160 اساتذہ اور دیگر ملازمین کو نوکریوں سے نکال دیا تھا۔

ملازمت سے برطرف کیے جانےوالوں میں سنہ 2015ء سے پابند سلاسل استاد یوسف البواب شامل ہیں۔ حوثیوں کی ایک نام نہاد عدالت نے البواب سمیت 36 دیگر ملازمین کو سزائے موت سنائی ہے۔ دوران حراست انہیں انسانیت سوز تشدد کا بھی نشانہ بنایا گیا۔