شام: التنف کے فوجی اڈے کے نزدیک بشار کی فوج اور انقلابی کمانڈو آرمی کی جھڑپیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام میں رواں ماہ کے پہلے ہفتے سے اردن اور عراق کی سرحد کے نزدیک واقع علاقے زون 55 کے نزدیک بشار کی فوج اور "انقلابی کمانڈو آرمی" کے درمیان جھڑپوں کا سلسلہ جاری ہے۔ انقلابی کمانڈو آرمی کو امریکا کے زیر قیادت بین الاقوامی اتحاد کی لاجسٹک اور ملٹری سپورٹ حاصل ہے۔ واضح رہے کہ التنف کا فوجی اڈہ بھی زون 55 کے اندر واقع ہے۔

جمعے کو علی الصبح الزرقا قصبے کے اطراف ہونے والی جھڑپوں میں فریقین کا جانی نقصان ہوا۔ شام میں مسلح اپوزیشن کے ذرائع کے مطابق جھڑپوں میں انقلابی کمانڈو آرمی کے 4 جنگجو جب کہ بشار کی فوج اور اس کی معاون ملیشیاؤں کے کم از کم 10 ارکان ہلاک ہو گئے۔

جھڑپوں کے علاقے میں واقع الرکبان پناہ گزین کیمپ میں شہری انتظامیہ کے میڈیا بیورو ڈائریکٹر محمود قاسم الہمیلی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ جمعے کی صبح زون 55 کی جانب پیش قدمی کی کوشش کے بعد بشار کی فوج ایک بار پھر پیچھے ہٹ گئی۔

بشارالاسد کی فوج زون 55 کے اندر 3 کلو میٹر تک آگے بڑھ چکی تھی مگر اس کے بعد انقلابی کمانڈو آرمی کے ساتھ اس کی جھڑپیں شروع ہو گئیں۔ اس دوران کمانڈو آرمی نے بشار کی فوج کے دو اہل کاروں کو قیدی بنا لیا۔ اس کے علاوہ دو فوجی ٹینکوں اور ایک توپ پر بھی کنٹرول حاصل کر لیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں