.

امریکی اتحاد نے شام میں داعش کے کمان مرکز کے طور پر استعمال ہونے والی مسجد ڈھادی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کی قیادت میں اتحاد کے لڑاکا طیاروں نے شام کے قصبے حاجن میں ایک مسجد کو بمباری کرکے شہید کردیا ہے۔اتحاد نے دعویٰ کیا ہے کہ یہ مسجد سخت گیر جنگجو گروپ داعش کے ایک کمان مرکز کے طور پر استعمال ہورہی تھی ۔وہاں داعش کے سولہ مسلح جنگجو موجود تھے اور وہ حملے میں مارے گئے ہیں۔

حاجن دریائے فرات کے مشرقی کنارے میں داعش کے زیر قبضہ آخری مضبوط مرکز ہے ۔امریکا کی حمایت یافتہ شامی جمہوری فورسز (ایس ڈی ایف) داعش کے جنگجوؤں کے خلاف کارروائی اس قصبے پر قبضے کے لیے گذشتہ کئی ماہ سے کارروائی کررہی ہیں۔

امریکی اتحاد نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’حملے میں سولہ مسلح دہشت گرد ہلاک ہوگئے ہیں۔یہ حقیقی خطرہ تھے اور اس مرکز کی تباہی سے داعش کی میدان جنگ میں لڑائی کی صلاحیت کو ختم کردیا گیا ہے‘‘۔

شام کے مشرقی صوبہ دیر الزور میں ایس ڈی ایف کی خاتون ترجمان لیلویٰ عبداللہ نے کہا ہے کہ حاجن پر اتحاد بہت جلد قبضہ کرلے گا۔

داعش تنظیم شام میں امریکا کی قیادت میں اتحاد ، شامی جمہوری فورسز اور روس کی مدد سے شامی فوج کی کارروائیوں میں گذشتہ ایک سال میں اپنے زیر قبضہ کم وبیش تمام علاقوں سے محروم ہوچکی ہے اور اب چند ایک قصبے یا دیہات ہی اس کے قبضے میں رہ گئے ہیں۔