غیر ملکی سرمایہ کاری بڑھ کر 13 ارب ریال ہو گئی : سعودی وزیر معیشت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب کے معیشت اور منصوبہ بندی کے وزیر محمد التویجری کا کہنا ہے کہ سال 2018 میں مملکت میں براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کا حجم 13 ارب ریال تک پہنچ گیا۔

بدھ کے روز بجٹ سیشن کے بعد ایک پریس کانفرنس کے دوران التویجری نے مزید کہا کہ غیر ملکی سرمایہ کاری کو قوانین کے حوالے سے ایک مکمل انفرا اسٹرکچر کی ضرورت ہے۔

التویجری کے مطابق 2019 کے آغاز کے ساتھ سعودی عرب میں بے روزگاری کی شرح میں کمی آنے کی توقع ہے جو کہ اس وقت 12.9% ہے۔

انہوں نے بتایا کہ اس وقت مملکت میں کام کی منڈی میں سعودی شہریوں کا حصہ 42% ہے۔

ادھر سعودی عرب کے وزیر خزانہ محمد الجدعان کا کہنا ہے کہ آئندہ بجٹ کے اہداف میں نمو، نجی سیکٹر کو سپورٹ، نجی سیکٹر کو خدمات کی فراہمی اور شفافیت اہم ترین ہیں۔

الجدعان کے مطابق قرضوں کے نرخ اور ان کی سطح اس وقت قابل قبول پوزیشن پر ہے۔

الجدعان نے باور کرایا کہ مملکت مقامی اور بیرونی قرضوں کے درمیان ہمہ جہتی میں اپنی حکمت عملی برقرار رکھنے کی خواہاں ہے۔

دوسری جانب سعودی عرب کی مالیاتی ایجنسی SAMA کے گورنر احمد بن عبدالکریم الخلیفی کا کہنا ہے کہ حال یا مستقبل میں ریال کے ایکسچینج ریٹ میں تبدیلی لانے کا کوئی ارادہ نہیں ہے۔


مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں