لبنان: علاج کی سہولت نہ ملنے پرفلسطینی بچہ دم توڑ گیا،ماں پرغشی کے دورے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لبنان کے ایک اسپتال میں زیرعلاج تین سالہ فلسطینی پناہ گزین بچہ علاج کے لیے اخراجات نہ ہونے کے باعث زندگی کی بازی ہار گیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شمالی لبنان کے طرابلس کے علاقے میں قائم ایک اسپتال میں 3 سالہ محمد وھبہ زیرعلاج تھا۔ اس کے والدین بچے کے علاج کے لیے اسپتال کے اخراجات پورے نہ کرسکے اور اسپتال انتظامیہ کی طرف سے بھی اس کے علاج میں معاونت سے انکار کردیاگیا جس کے بعد بچہ دم توڑ گیا۔

ذرائع کے مطابق اسپتال میں دم توڑنے والا فلسطینی بچہ لبنان میں نہر البارد پناہ گزین کیمپ میں رہائش پذیر ایک فلسطینی شہر کا تھا۔ ذرائع کے مطابق لبنانی وزارت صحت نےواقعے کی تحقیقات شروع کر دی ہیں۔

ادھر اسپتال میں علاج کی سہولت نہ ملنے کے باعث بچےکی موت کے واقعے پر فلسطینی پناہ گزین مشتعل ہوگئے۔ انہوں‌نے ٹائر جلا کر نہر البارد پناہ گزین کیمپ کی مرکزی شاہراہ بند کر دی۔ اس موقع پر فوت ہونے والے بچے کی نماز جنازہ ادا کی گئی جس میں سیکڑوں فلسطینیوں‌نے شرکت کی۔

اسپتال میں کم سن بچے کی موت پر اس کے والدین غم سے نڈھال ہیں جب کہ دیگر شہریوں‌نے بھی ان کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کیا ہے۔ فلسطینی پناہ گزینوں نے علاج میں لاپرواہی برتنے پر لبنانی حکومت کے خلاف احتجاج کیا ہے جب کہ بیروت نے واقعے کی تحقیقات کا فیصلہ کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں