ایران پر نظر رکھنے کے لیے امریکی طیارہ بردار بحری جہاز خلیج میں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی طیارہ بردار بحری جہاز USS John C. Stennis خلیج عربی کے پانی میں پہنچ گیا ہے۔ یہ ایران کے ساتھ جوہری معاہدے سے امریکی علاحدگی کے بعد علاقے میں پہنچنے والا پہلا امریکی طیارہ بردار جہاز ہے۔ مذکورہ پیش رفت تہران کی جانب سے تزویراتی اہمیت کی حامل آبنائے ہرمز کی بندش سے متعلق دھمکیوں کی تکرار کے بعد سامنے آئی ہے۔

اس طرح کئی ماہ سے جاری خطے میں امریکا کی عسکری عدم موجودگی کا سلسلہ بھی اختتام پذیر ہو گیا۔

رواں ماہ پانچ دسمبر کو ایرانی صدر حسن روحانی آبنائے ہرمز کو بند کر دینے کی دھمکی دے چکے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ واشنگٹن کو جان لینا ہو گا کہ وہ ایرانی تیل کی برآمد روک دینے کی قدرت نہیں رکھتا۔

امریکی اخبار "وال اسٹریٹ جرنل" نے پینٹاگون میں ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ یہ بحری مجموعہ متوقع طور پر خطے میں کم از کم دو ماہ رہے گا۔

اس کا مقصد ایسے وقت میں ایران کے سامنے طاقت کا مظاہرہ ہے جب کہ ایرانی پاسداران انقلاب زمینی اور سمندری مشقیں شروع کرنے والی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں