ایرانی نظام اندر سے برباد ہو چکا ہے : فائزہ رفسنجانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کے ایک سابق صدر اور مجلس تشخیص مصلحت نظام کے سابق سربراہ ہاشمی رفسنجانی کی بیٹی کا کہنا ہے کہ ایران کا حکمراں نظام اندرونی طور پر کھوکھلا ہوتا جا رہا ہے۔

بدھ کے روز روزنامہ "مستقل" کے ساتھ بات چیت میں اصلاح پسند کارکن فائزہ رفسنجانی نے باور کرایا کہ "حکمراں نظام کے اندر بربادی واقع ہو چکی ہے اور اب ٹرک ڈرائیوروں سے لے کر اساتذہ تک اکثر لوگ احتجاجی مظاہرے کر رہے ہیں"۔

انہوں نے کہا کہ حالیہ نظام کے مکمل سقوط نہ ہونے کی واحد وجہ لوگوں کا یہ اندیشہ ہے کہ موجودہ حکمرانوں کے کوچ کر جانے کی صورت میں کوئی متبادل موجود نہیں۔

فائزہ رفسنجانی کالعدم اخبار "زَن" کی چیف ایڈیٹر، سابق رکن پارلیمنٹ اور اس وقت حکمران نظام کو تنقید کا نشانہ بنانے والی نمایاں ترین شخصیات میں سے ہیں۔ انہوں نے 2009 میں سبز تحریک کی حمایت کے سبب 6 ماہ گرفتاری میں بھی گزارے۔ یہ تحریک اُس وقت صدارتی انتخابات میں جعل سازی کے خلاف احتجاج کے سلسلے میں سامنے آئی تھی۔

رواں سال جون میں فائزہ نے ایرانی نظام کی پالیسیوں اور شام اور یمن میں مداخلت پر کڑی نکتہ چینی کی تھی۔ انہوں نے کہا تھا کہ یہ پالیسیاں اور عوام کے احتجاج کے خلاف کریک ڈاؤن اس نظام کو لے ڈوبے گا۔

ایران میں اصلاح پسندوں سے تعلق رکھنے والی سرگرم کارکن کے مطابق رواں سال کے آغاز میں ملک میں ہونے والا احتجاج اور مظاہرے اس بات کی علامت ہیں کہ لوگ موجودہ حالات سے خوش نہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں