سعودی عرب میں مقامی انجینئروں کے تیار کردہ ڈرون طیارے "صقر 4" کی نمائش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں جنادریہ کے فیسٹول میں کنگ عبدالعزیز سٹی فار سائنس اینڈ ٹکنالوجی نے توانائی اور معدنی دولت کی وزارت کے پویلین میں "صقر 4" کے نام سے ڈرون طیاروں کے دو ورژن نمائش کے لیے رکھے ہیں۔ ان طیاروں کی ڈیزائننگ اور تیاری مکمل طور پر سعودی انجینئروں کے ہاتھوں انجام پائی ہے۔

مذکورہ ڈرون طیارہ سعودی عرب کے ویژن 2030 پروگرام کے ضمن میں شامل منصوبوں کا حصہ ہے۔ ان منصوبوں کا مقصد مقامی سطح کی ٹکنالوجی کو جدید بنانا ہے۔

یہ "صقر 4" ڈرون طیارہ اپنے کم وزن اور چھوٹے حجم کے باعث منفرد حیثیت رکھتا ہے۔ یہ 5 ہزار فٹ کی اوسط بلندی پر اڑ سکتا ہے۔ اس کے اڑنے کا دورانیہ 5 گھنٹوں کے قریب ہے۔ "صقر 4" ڈرون طیارہ "کاربن فائبر" سے تیار کیا گیا ہے۔ اس کی لمبائی 2.3 میٹر اور فی گھنٹہ رفتار 120 کلو میٹر ہے۔ اڑان کے دوران طیارے کا اپنا وزن 5 کلو گرام ہے جب کہ یہ 25 کلو گرام تک کا وزن لے جانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ صقر 4 طیارہ متعدد امور میں کام میں آ سکتا ہے۔ ان میں دن و رات کے اوقات میں تصاویر لینے کے علاوہ ریڈار ٹکنالوجی اور الکٹرونک جنگ کی ٹکنالوجی سے لیس کرنا بھی شامل ہے۔

"صقر 4" طیارے کو زمینی اسٹیشن سے مکمل درستی اور اعلی پائے داری کے ساتھ کنٹرول کیا جا سکتا ہے۔ اس کے مشن پورا کرنے کی صلاحیت کو جانچنے کے لیے بہت سے تجربات کیے گئے۔ ان کے نتیجے میں طیارے نے مقامی اور بین الاقوامی معیار کے لحاظ سے ریکارڈ کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں