شام پرحملوں میں فضائی حدود کی خلاف ورزی پرلبنان کا اسرائیل سے احتجاج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لبنان نے شام پرحملوں کے لیے اپنی فضائی حدود پامال کرنے پرایک بار پر اسرائیل سے سخت احتجاج کیا ہے۔

لبناننی وزارت خارجہ کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں‌کہا گیا ہے کہ صہیونی طیاروں کا شام پر حملوں کے لیے لبنان کی فضائی حدود کو استعمال کرنا قرارداد 1701 کی کھلی خلاف ورزی ہے۔ عالمی برادری اورسلامتی کونسل بھی اس کا نوٹس لے اور لبنان کی فضائی حدود کو غیرقانونی طور پر استعمال کرنے کی مذمت کرے۔

خیال رہے کہ دو روز قبل اسرائیل نے شام کے دارالحکومت دمشق میں متعدد مقامات پر بم باری کی تھی جس میں حزب اللہ اور ایرانی پاسداران انقلاب کے متعدد اسلحہ ڈپو تباہ کردیے گئے تھے۔ ان حملوں کے لیے اسرائیل نے مبینہ طورپر لبنان کی فضائی حدود استعمال کی تھیں۔

لبنانی وزارت خارجہ کے ترجمان جبران باسین نے بیروت نے اقوام متحدہ میں لبنان کی مستقل مندوبہ کو احکامات دیے ہیں کہ وہ سلامتی کونسل میں اسرائیل کےہاتھوں لبنان کی فضائی حدودکی خلاف ورزی کی شکایت کرے۔ اسرائیل کا لبنان کی فضائی حدود کو استعمال کرنا خطے کی سلامتی کے لیے خطرہ ہے۔ صہیونی ریاست کے اس اقدام سے شہری ہوابازی کسی بڑے سانحے سے دوچار ہوسکتی ہے۔

درایں اثناء اسرائیلی فوج نے لبنان کی سرحد پر موجود حزب اللہ کی سرنگوں کی ذمہ داری بیروت پر عاید کی ہے اور کہا ہےکہ حملوں کے لیے تیارکی گئی سرنگوں کے سنگین نتائج کا ذمہ دار اسرائیل ہوگا۔ صہیونی فوج کا کہنا ہے کہ حزب اللہ کی سرنگیں قرارداد 1701 کی خلاف ورزی اور اسرائیل کی خود مختاری کی کھلی خلاف ورزی ہے۔ خیال رہے کہ اسرائیلی فوج نے لبنان کی سرحد پر حزب اللہ کی طرف سے کھودی گئی ایک اور سرنگ تباہ کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں