.

نئے سعودی وزیر اطلاعات ترکی بن عبداللہ الشبانہ سے ملیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے شاہی فرمان کے تحت کابینہ میں رد وبدل کرتے وئے ترکی بن عبداللہ الشبانہ کو نیا وزیر اطلاعات ونشریات مقرر کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق عبداللہ بن شبانہ ابلاغی چینل اور پروگرام کے انتظامی امور میں گہری مہارت رکھتے ہیں۔ وہ سنہ 1990ء کے وسط میں 'ایم بی سی' کے ساتھ کرنے کے علاوہ کئی دوسرے ابلاغی اور نشریاتی اداروں میں کلیدی ذمہ داریوں پر فائز رہے ہیں۔ کئی ریڈیو اور ٹی وی چینلز میں پیشہ وارانہ انتظامی امور کی انجام دہی کے بعد روتانا گروپ کے ساتھ وابستہ ہوئے۔

ترکی الشبانہ کا آبائی شہر الریاض ہے اور وہ 4 نومبر 1964ء کو پیدا ہوئے۔ انہوں نے امریکا سے بزنس ایڈمنسٹریشن کے شعبے میں تعلیم حاصل کی۔ سعودی عرب میں وزیر اطلاعات مقرر ہونے سے پیشتر وہ 'روتانا' میڈیا گروپ کے ساتھ وابستہ تھے اور ادارے کے چیف ایگزیکٹیو کے عہدے پر فائز رہے۔ انہیں سعودی عرب اور دنیا بھر کی موثر 500 ابلاغی شخصیات میں شامل کیا گیا۔

فلم پروڈکشن کے شعبے میں بھی الشبانہ نے گراں قدر خدمات انجام دہیں اور عرب ممالک کے مختلف اداروں سے ایوارڈ بھی حاصل کیے۔ ترکی بن عبداللہ الشبانہ کو سعودی عرب میں وزیر اطلاعات مقرر کیے جانے پر سوشل میڈیا پر مثبت رد عمل ظاہر کیا گیا ہے۔