.

کرد ملیشیا کی دعوت پر اسدی فوج منبج میں داخل؛ شامی پرچم لہرا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کی سرکاری فوج نے ترکی کی سرحد سے متصل کرد اکثریتی علاقے 'منبج' میں داخل ہونے کے بعد وہاں شامی پرچم لہرا دیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق بشار الاسد کی وفادار فوج کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ شامی فوج منبج میں تمام شہریوں کے جان ومال کا تحفظ یقینی بنائے گی۔

قبل ازیں کرد پروٹیکشن یونٹس کی طرف سے جمعہ کے روز جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا تھا کہ کرد جنگجو منبج سے انخلاء کر رہے ہیں۔ شہر کا کنٹرول اسد رجیم کے حوالے کیا جا رہا ہے۔ اس سلسلے میں اسد رجیم کو شہرمیں داخل ہونے کی دعوت دی گئی ہے۔

کرد جنگجوئوں نے اسدی فوج سے ترک فوجیوں کے ممکنہ حملے میں تحفظ فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ ترکی اس گروپ کو دہشت گرد خیال کرتا ہے۔

کرد پروٹیکشن یونٹس کے بیان میں‌ کہا گیا ہے کہ شہریوں اور سرحد سمیت علاقے کا کنٹرول شامی فوج کے حوالے کر دیا گیا ہے۔ منبج کا کنٹرول شامی فوج کو ایک ایسے وقت میں دیا گیا ہے جب دوسری جانب شامی اور روسی فوج کی بھاری نفری پہلے شہر کی سرحد پر جمع ہو گئی تھی۔